Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کی سازش،ملک کے سیکولرازم کو خطرہ، جناب محمد فاروق حسین کا بیان

تعلیم کو زعفرانی رنگ دینے کی سازش،ملک کے سیکولرازم کو خطرہ، جناب محمد فاروق حسین کا بیان

حیدرآباد /8 ستمبر (سیاست نیوز) کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل محمد فاروق حسین نے کہا کہ بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے حکومت کا ریموٹ کنٹرول آر ایس ایس کے ہاتھ میں ہے۔ انھوں نے کہا کہ جدوجہد آزادی میں مسلمانوں نے دیگر ابنائے وطن کے ساتھ ہر طرح کی قربانی دی ہے۔ تحریک آزادی میں انگریزوں کے مخبر کا رول ادا کرنے والے جن سنگھی اور ہندوتوا طاقتیں 60 سال بعد اقتدار حاصل کرتے ہی سب سے بڑے محب وطن ہونے کا دعویٰ کر رہے ہیں اور مجاہدین آزادی گاندھی جی، جواہر لال نہرو، مولانا ابوالکلام آزاد وغیرہ کو نظرانداز کرکے ناتھو رام گوڈسے اور ساورکر وغیرہ کو قومی ہیرو بناکر پیش کرکے ملک کی تاریخ بدلنا چاہتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ فرقہ پرست ذہنیت کے حامل شخصیوں کو اعلی عہدوں پر تقرر کرتے ہوئے کبھی دستور ہند کی تبدیلی کا مطالبہ کیا جا رہا، کبھی لوجہاد اور کبھی گھرواپسی پروگرام منعقد کیا جا رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ بی جے پی زیر قیادت این ڈی اے حکومت میں اقلیتوں کے خلاف مہم چلائی جا رہی ہے، انھیں بدنام کیا جا رہا ہے، سماجی مساوات کی دھجیاں اڑاکر سیکولرازم کو نقصان پہنچایا جا رہا ہے، جس کی وہ سخت مذمت کرتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ گاندھی جی کے قتل کے بعد جس تنظیم (آر ایس ایس) پر امتناع عائد کیا گیا تھا، آج اس تنظیم کے سامنے مرکزی حکومت گھٹنے ٹیک رہی ہے۔ اس سے بھی زیادہ تشویش کی بات یہ ہے کہ ملک کے وزیر اعظم نریندر مودی اس کی مدافعت کر رہے ہیں اور وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ آر ایس ایس کے نمائندہ ہونے پر فخر کا اظہار کر رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ ملک کی موجودہ صورت حال دیکھ کر مسلم پرسنل لاء بورڈ کی جانب سے شروع کردہ ’’دین بچاؤ، دستور بچاؤ‘‘ تحریک قابل ستائش ہے، لہذا اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کو چوکنا رہنے کی ضرورت ہے۔ انھوں نے کہا کہ ہندوستان ایک سیکولر اور جمہوری ملک ہے، تمام شہریوں کو مساوی حقوق حاصل ہیں، لہذا جن سنگھیوں کی سازش کو ناکام بنانے کے لئے اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کو اتحاد کا مظاہرہ کرنا چاہئے، کیونکہ ناانصافیوں کے خلاف آواز اٹھانا ہمارا جمہوری حق ہے۔

TOPPOPULARRECENT