Friday , June 22 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اسمبلی و کونسل میں عوامی مسائل کو اُٹھانے کانگریس کی حکمت عملی

تلنگانہ اسمبلی و کونسل میں عوامی مسائل کو اُٹھانے کانگریس کی حکمت عملی

حیدرآباد 9 نومبر (سیاست نیوز) صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر پنالہ لکشمیا نے کہاکہ 14 تا 19 نومبر تلنگانہ کانگریس پارٹی کی رکنیت سازی مہم میں تیزی پیدا کردی جائے گی۔ سماج کے تمام طبقات کو دوبارہ پارٹی سے جوڑنے کیلئے مختلف پروگرامس کئے جائیں گے۔ مسٹر پنالہ لکشمیا نے کہاکہ صدر کانگریس مسز سونیا گاندھی نے علیحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دیا ہے۔ تاہم عوام سے گمراہ کن کبھی نہ پورے ہونے والے وعدے کرتے ہوئے سربراہ ٹی آر ایس مسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے اقتدار حاصل کرلیا ہے۔ کانگریس پارٹی عوام کے فیصلے کا احترام کرتی ہے۔ جیت ہار کانگریس پارٹی کیلئے کوئی نئی بات نہیں ہے۔ کانگریس پارٹی اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کرتے ہوئے عوامی مسائل کو اُجاگر کرے گی اور اُنھیں حل کرنے کیلئے حکومت کو مجبور کردے گی۔ اسمبلی اور کونسل میں بھی عوامی مسائل کو اُٹھانے کیلئے کانگریس پارٹی نے خصوصی حکمت عملی تیار کی ہے۔ ہر موضوع کانگریس کے ارکان اسمبلی اور ارکان قانون ساز کونسل اپنے اپنے ایوانوں میں جہاں کی وہ نمائندگی کرتے ہوئے عوام کی آواز بن کر مسائل کو جمہوری انداز میں پیش کریں گے۔ اُنھوں نے کہاکہ 14 تا 19 نومبر تلنگانہ میں کانگریس کی رکنیت سازی مہم تیزی سے چلائی جائے گی۔ تلنگانہ کے تمام 10 اضلاع میں اسمبلی اور گاؤں کی سطح پر رکنیت سازی مہم شروع کی جائے گی۔ کانگریس پارٹی کو مستحکم کرنے کے لئے بڑے پیمانے پر اقدامات کئے جائیں گے۔ کانگریس کی محاذی تنظیموں کا علیحدہ علیحدہ اجلاس طلب کرتے ہوئے سماج کے تمام طبقات میں کانگریس کا دوبارہ اعتماد بحال کیا جائے گا۔ مہیلا کانگریس، یوتھ کانگریس کے علاوہ کانگریس کی طلبہ تنظیم این ایس یو آئی کا بھی علیحدہ اجلاس طلب کرتے ہوئے ہر ایک کو عوامی مسائل کے حل کیلئے جدوجہد کرنے کا مشورہ دیا جائے گا۔ مسٹر پنالہ لکشمیا نے کہاکہ اکثر دو سال کے بعد کسی بھی حکومت کے خلاف عوامی لہر شروع ہوتی ہے تاہم تلنگانہ میں صرف دو ماہ کے بعد ہی ٹی آر ایس حکومت کے خلاف عوامی لہر شروع ہوگئی ہے۔ ٹی آر ایس نے اپنے انتخابی منشور میں جتنے بھی وعدے کئے تھے اس میں ایک بھی وعدے کو پورا نہیں کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT