Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اسٹوڈنٹس جے اے سی قائد کے خلاف مقدمہ کی اجازت

تلنگانہ اسٹوڈنٹس جے اے سی قائد کے خلاف مقدمہ کی اجازت

حیدرآباد 9 مارچ (سیاست نیوز) ریاست تلنگانہ کے محکمہ قانون نے عثمانیہ یونیورسٹی طلبہ کے جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے قائد ایم کرشانک عرف اگسٹن کے خلاف فوجداری مقدمہ چلانے کی اجازت دیدی ۔ نومبر سال 2013 میں سٹی کمشنر پولیس حیدرآباد نے محکمہ قانون کو ایک مکتوب روانہ کیا تھا جس میں کرشانک کو گوپالا پورم پولیس اسٹیشن میں درج کردہ مقدمہ کرائم نمبر 17/2012 تعزیرات ہند کی دفاع 153(A) (دونوں فرقوں میں منافرت پیدا کرنا) اور 427( توڑ پھوڑ ) کے تحت مقدمہ چلانے کی اجازت طلب کی تھی۔
حکومت نے آج کرشانک اگسٹن کے خلاف مقدمہ چلانے کی منظوری دیدی۔ اس سلسلہ میں ربط پیدا کئے جانے پر جے اے سی لیڈر کرشانک نے بتایا تلنگانہ تحریک میں حصہ لینے والوں کو انعام دینے کے بجائے حکومت انتقام لے رہی ہے جس کی زندہ مثال ان کے خلاف مقدمہ چلانے کی اجازت دینا ہے ۔حکومت تلنگانہ کی تحریک میں حصہ لینے والوں کے خلاف نا انصافی کررہی ہے اور مخالفین تلنگانہ کو عہدوں سے نوازا جارہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT