Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اضلاع کی تنظیم جدید سے انتظامی اُمور میں بہتری

تلنگانہ اضلاع کی تنظیم جدید سے انتظامی اُمور میں بہتری

کمرشیل ٹیکس آمدنی میں اضافہ ‘ جی ایس ٹی پر عمل آوری سے حکومت کو فائدہ ‘ کونسل میں 9مطالباتِ زر منظور

حیدرآباد ۔ 20مارچ ( سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز اسمبلی میں آج 9مطالباتِ زر منظور کئے گئے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے کہاکہ اضلاع کی تنظیم جدید سے انتظامی اُمور میں بڑے پیمانے پر سدھار آرہا ہے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے کہا کہ کمرشیل ٹیکس میں ریاست کی آمدنی میں 15.3فیصد کا اضافہ ہوا ہے ۔ آج اسمبلی میں محکمہ مال و رجسٹریشن ‘ محکمہ اکسائز ‘ محکمہ کمرشیل ٹیکس ‘ محکمہ ٹرانسپورٹ ‘ محکمہ داخلہ ‘ محکمہ زراعت ‘ محکمہ انیمل ہسبنڈری ‘ محکمہ امداد باہمی ‘ محکمہ سیول سپلائیز کے مطالبات زر پر طویل مباحث ہونے کے بعد 9مطالباتِ زر منظور کئے گئے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے کہا کہ انتظامی اُمور میں شفافیت لانے کیلئے چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے 21 نئے اضلاع کو تشکیل دیتے ہیوئے انتظامی اُمور میں بڑے پیمانے پر سدھار لایا گیا ‘ مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ 1.25لاکھ غریب عوام میں پٹہ جات تقسیم کئے گئے ‘ اراضی رکھنے والے وہ کسان جن کے پاس ڈاکومنٹس نہیں ہے ‘ حکومت انہیں ٹائیٹل فراہم کرنے پر سنجیدگی سے غور کررہی ہے ۔ نیا سروے کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے خصوصی توجہ دی جارہی ہے ‘ ابھی تک 10ہزار گاؤں کے نقشے تیار کئے گئے ۔ ڈپٹی چیف منسٹر کڈیم سری ہری نے کہا کہ ریاست کے کمرشیل ٹیکس آمدنی میں زبردست اضافہ ہورہا ہے ۔ گذشتہ شرح ترقی 12.85 فیصد تھی ‘ جاریہ سال 15.3 فیصد تک پہنچنے کا امکان ہے ۔ حکومت کی منصوبہ بندی سے شرح آمدنی میں اضافہ ہورہا ہے ۔ ٹیکس چوری کرنے والوں کا پتہ دینے پر پہلے 10ہزار روپئے کا انعادم دیا جاتا تھا ‘ انعامی رقم کو بڑھاکر 50ہزار روپئے کردیا گیا ہے ۔ اس کے علاوہ ٹول فری نمبر کی بھی سہولت فراہم کی گئی ہے ۔ 12کروڑ روپئے خرچ کرتے ہوئے چیک پوسٹس کو عصری سہولتوں سے لیس کیا گیا ہے ۔ جی ایس ٹی پر عمل آوری سے فائدے اور نقصانات کا پتہ چل جائے گا ۔ سرویس ٹیکس اور سیل ٹیکس کی آمدنی میں تلنگانہ کی حصہ داری بڑھ جائے گی ۔ کمرشیل ٹیکس کے سرکلس میں اضافہ کرنے کی تجویز ہے ۔ وزیر سیول سپلائیز ایٹالہ راجندر نے کہا کہ ہر غریب کو چاول دینے کی اسکیم پر عمل کیا جارہا ہے ۔ دیہی علاقوں میں راشن کارڈس ‘ زیادہ اتر آروگیہ شری اور فیس ریمبرسمنٹ کیلئے استعمال ہورہا ہے ۔ راشن شاپس سے چاول نہ لینے کی صورت میں منسوخ ہورہا ہے ۔ چاول کی سپلائی میں ہونے والی بے قاعدگیوں کو روکنے کیلئے بڑے پیمانے پر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ قرض حاصل کرنا معمولی روایت کے مطابق جاری ہے ‘ غلطیاں کرنے والوں کے خلاف پی ڈی ایکٹ نافذ کرتے ہوئے جیل بھی روانہ کیا جارہا ہے ۔ وزیر اکسائز پدما راؤ نے کہا کہ تلنگانہ کو گڑمبہ سے پاک بنانے کیلئے اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ ریاست میں شراب کی دکانات گھٹی ہیں بڑھنے کی تردید کی ۔ وزیر ٹرانسپورٹ مہیندر ریڈی نے کہا کہ انتخابی ضابطہ اخلاق کی وجہ سے نئی آر ٹی سی بسیں اور منی بسوں کا افتتاح نہیں کیا گیا ہے ۔ انتخابی ضابطہ اخلاق ختم ہوجانے کے بعد چیف منسٹر نئی بسوں کا افتتاح کریں گے ۔ آر ٹی سی کی خالی اراضیات پر تھیٹرس اور پٹرول پمپس قائم کرنے کی تجویز ہے ۔ وزیر داخلہ این نرسمہا ریڈی نے کہا کہ ریاست میں عوام کی سیکیورٹی اور لاء اینڈ آرڈر کو کنٹرول کرنے کیلئے بڑے پیمانے پر اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ فٹ پاتھ پر کاروبار کرنے والوں کو جیل نہ بھیجنے کی پولیس کے اعلیٰ عہدیداروں کو ہدایت دی گئی ہے ‘ وہ بہت جلد شہرکے ارکان اسمبلی کا اجلاس طلب کرتے ہوئے اس مسئلہ کا حل دریافت کریں گے ۔ وزیر انیمل ہسبنڈری سرینواس یادو ‘ ریاستی وزیر امداد باہمی ہریش راؤ اور ریاستی وزیر زراعت پوچارم سرینواس ریڈی نے ارکان اسمبلی کی جانب سے پوچھے گئے سوالات کے جوابات دیئے ۔

TOPPOPULARRECENT