Thursday , September 20 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اور آندھرا کے انضمام سے قبل تلنگانہ کے مسلمانوں کے خلاف سازش

تلنگانہ اور آندھرا کے انضمام سے قبل تلنگانہ کے مسلمانوں کے خلاف سازش

حیدرآباد۔17مارچ(سیاست نیوز) ریاست حیدرآباد کی انڈین یونین میںشمولیت اور مابعد متحدہ ریاست آندھرا پردیش کے قیام سے علاقہ تلنگانہ میں لسانی بنیادوں پر ناانصافیوں کا آغاز ثابت ہوا1956اور مابعد ریاست آندھرا پردیش کے قیام سے قبل ریاست حیدرآباد کا ہمہ لسانی تہذیب کی علمبردار ریاست کے طور پر شمار کیا جاتاتھا جسے منظم انداز میں نشا

حیدرآباد۔17مارچ(سیاست نیوز) ریاست حیدرآباد کی انڈین یونین میںشمولیت اور مابعد متحدہ ریاست آندھرا پردیش کے قیام سے علاقہ تلنگانہ میں لسانی بنیادوں پر ناانصافیوں کا آغاز ثابت ہوا1956اور مابعد ریاست آندھرا پردیش کے قیام سے قبل ریاست حیدرآباد کا ہمہ لسانی تہذیب کی علمبردار ریاست کے طور پر شمار کیا جاتاتھا جسے منظم انداز میں نشانہ بناتے ہوئے تلنگانہ کی تلگو اور اُردو تہذیب کو بدل کر رکھ دیا گیا مجوزہ ریاست تلنگانہ میں پسماندگی کا شکار طبقات کے ساتھ انصاف پر گفتگو کے دوران سماجی جہدکار راما ملکوٹے نے یہ بات کہی۔انہوں نے کہاکہ متحدہ ریاست آندھرا پردیش کے قیام سے قبل اُردو ریاست حیدرآباد کی سرکاری زبان تھی مگر ریاستی انتظامیہ میں غیرعلاقائی لوگوں کی بڑھتی اجارہ داری نے اُردو زبان کے موقف کو ہی بدل کر رکھ دیا اور اُردو جس کا دنیا کی خوبصورت اور میٹھی زبان میںشمار ہے مگر اُردو کو روزگار سے علیحدہ کرکے اُردو زبان کوتباہی کے دہانے پر پہنچانے کاکام کیاگیا۔شریمتی راما ملکوٹے نے تلنگانہ اور آندھرا کے انضمام سے قبل تلنگانہ میں مسلمانوں کے سیاسی اور معاشی موقف کے خلاف بھی سازشیں رچنے کا آندھرائی حکمرانوں پر الزام عائد کیاانہوںنے کہاکہ ریاست حیدرآباد کی ترقی تمام طبقات کے ساتھ انصاف اور ریاستی انتظامیہ کی بہترین کارکردگی کی ایک عظیم تاریخ ریاست حیدرآباد کے مسلمان رکھتے ہیں

باوجود اسکے تاریخ کو توڑ مروڑ کر پیش کرتے ہوئے مفاد پرست مورخین نے تلنگانہ کے ہندو اور مسلمانوں کے درمیان دراڑیں پیدا کیں ۔ انہوں نے تلنگانہ کے علاوہ اترپردیش ‘ بہار‘ دہلی اور نارتھ انڈیا کی بیشتر ریاستوں میں بھی اُردو زبان کے ساتھ ہوئی ناانصافیوں کا اس موقع پر تذکرہ کرتے ہوئے کہاکہ اُردوکو مسلمانوں سے جوڑ کر نہ صرف اُردو زبان کا استحصال کیا گیا بلکہ مسلم سماج کے خلاف رچی گئی سازشوں کو عملی جامہ پہنانے کاکام بھی اُردو کی تباہی کے ذریعہ ہی کیاگیا۔شریمتی راما ملکوٹے نے مجوزہ ریاست تلنگانہ میں ریاست حیدرآباد کی حقیقی تاریخ کے احیاء کے لئے کمیٹیاں قائم کرنے اور تاریخی نصاب میںاس کو شامل کرتے ہوئے علاقہ تلنگانہ کی فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور بھائی چارگی کی بازیابی کو یقینی بنانے پر زوردیا۔

انہوں نے تلنگانہ تحریک کے دوران پسماندگی کا شکار طبقات دلت ‘ پچھڑے ‘ قبائیلی اور مسلمانوں کے ساتھ کئے گئے وعدوں کو بھی پورا کرنے کا علاقائی اور قومی جماعتوں سے مطالبہ کیا اور کہاکہ متحدہ ریاست آندھرا پردیش میں استحصال کا شکار طبقات کے ساتھ کسی بھی قسم کی ناانصافی کے خلاف ایک اور تحریک شروع کی جائے گی۔ انہوں نے نئی ریاست تلنگانہ میں مسلمانوں کو آبادی کے تناسب سے تحفظات فراہم کرنے کی بھی تائید وحمایت کی اور کہاکہ اس سے مسلمانوں کے ساتھ ہوئی ناانصافیوں کو ختم کیاجاسکے گا۔انہوں نے نہ صرف مسلمان بلکہ پسماندگی کا شکار تمام طبقات کو نئی ریاست تلنگانہ میں آبادی کے تناسب سے تحفظات اور مرعات کو لازمی قراردیا جس کے ذریعہ سنہری تلنگانہ ریاست کی تشکیل کو یقینی بنایا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT