Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ اور آندھراپردیش اسمبلی حلقوں کی نئی حد بندی ہوگی

تلنگانہ اور آندھراپردیش اسمبلی حلقوں کی نئی حد بندی ہوگی

تلنگانہ اسمبلی حلقوں کی تعداد 153 ہوجائے گی، پارلیمنٹ کے مانسون سیشن میں بل پیش ہوگا
حیدرآباد 9 اپریل (سیاست نیوز) اسمبلی حلقوں کی نئی حد بندی کے ذریعہ آندھراپردیش اور تلنگانہ اسمبلیوں کے حلقوں کی تعداد میں اضافہ یقینی نظر آرہا ہے۔ آبادی کی بنیاد پر اور حد بندی قواعد کی اساس پر تلنگانہ اسمبلی حلقوں کی تعداد موجودہ 119 سے بڑھ کر 153 اور آندھراپردیش اسمبلی حلقوں کی تعداد موجودہ 175 سے اضافہ ہوکر 225 ہوجائے گی۔ حلقوں کی نئی حد بندی سال 2019 ء میں عام انتخابات سے پہلے ہوجائے گی۔ ٹی آر ایس کے ایم پی جی ونود کمار نے کہاکہ اس تعلق سے فیصلہ جلد متوقع ہے۔ مرکز امکان ہے کہ اس تعلق سے بل پارلیمنٹ کے مانسون سیشن میں پیش کرے گا۔ مرکز حلقوں کی نئی حد بندی پر غور کررہا ہے اور مرکزی وزارت داخلہ اس مسئلہ کے تمام پہلوؤں کا جائزہ لے رہی ہے۔ مرکزی وزیرداخلہ راج ناتھ سنگھ حال میں کہہ چکے ہیں کہ نئی حد بندی مرکز کے ایجنڈہ میں ہے۔ حکومت نے دستوری ماہرین سے اس سلسلہ میں رائے حاصل کی ہے۔ الیکشن کمیشن نے تلنگانہ اور آندھراپردیش کے چیف الیکٹورل آفیسرس سے کہا ہے کہ وہ ہر حلقہ کے تحت منڈل اور دیہاتوں کے ناموں سے متعلق تفصیلات روانہ کریں۔ یہ اقدام سمجھا جاتا ہے کہ اسمبلی حلقوں کی تعداد میں اضافہ کی تیاری کا حصہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT