Monday , January 22 2018
Home / ہندوستان / تلنگانہ بل کی تائید، بی جے پی کا منموہن سنگھ کو تیقن

تلنگانہ بل کی تائید، بی جے پی کا منموہن سنگھ کو تیقن

نئی دہلی ۔ 12 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج وزیراعظم منموہن سنگھ کو اہم ترین تلنگانہ بل کی تائید کی پیشکش کی۔ تاہم یہ بھی واضح کیا کہ حکومت کو مجوزہ دونوں ریاستوں کے ساتھ ساتھ سیما ۔ آندھرا کے عوام کی تشویش دور کرنی چاہئے۔ وزیراعظم اس مسئلہ پر اتفاق رائے کیلئے کوشش کررہے ہیں کیونکہ پارلیمنٹ میں مسلسل ہنگامہ آرائی کی جارہی ہ

نئی دہلی ۔ 12 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی نے آج وزیراعظم منموہن سنگھ کو اہم ترین تلنگانہ بل کی تائید کی پیشکش کی۔ تاہم یہ بھی واضح کیا کہ حکومت کو مجوزہ دونوں ریاستوں کے ساتھ ساتھ سیما ۔ آندھرا کے عوام کی تشویش دور کرنی چاہئے۔ وزیراعظم اس مسئلہ پر اتفاق رائے کیلئے کوشش کررہے ہیں کیونکہ پارلیمنٹ میں مسلسل ہنگامہ آرائی کی جارہی ہے۔ چنانچہ انہوں نے آج اپنی رہائش گاہ پر لنچ پر بی جے پی کے سرکردہ قائدین کو مدعو کیا۔ یہ بات چیت جو تقریباً دیڑھ گھنٹہ جاری رہی، بی جے پی قائدین واضح کیا کہ پارٹی علحدہ ریاست تلنگانہ کے عہد کی پابند ہے اور وہ بل کی تائید کیلئے بھی تیار ہے لیکن انہوں نے سیما ۔ آندھرا علاقہ کیلئے پیاکیج کا واضح طور پر اعلان کرنے کا مطالبہ کیا۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم نے بی جے پی قائدین ایل کے اڈوانی، راجناتھ سنگھ، سشماسوراج اور ارون جیٹلی کو لنچ پر مدعو کیا تھا تاکہ پارلیمنٹ میں جاری تعطل کو ختم کیا جاسکے اور زیرتصفیہ اہم بلس کی منظوری یقینی ہوسکے۔ اجلاس میں مرکزی وزراء اے کے انٹونی، پی چدمبرم، کمل ناتھ اور سشیل کمار شنڈے بھی موجود تھے۔ ذرائع نے بتایا کہ بی جے پی قائدین نے وزیراعظم منموہن سنگھ پر واضح کیا کہ تلنگانہ کے تعلق سے ان کا موقف تبدیل نہیں ہوا ہے اور انہوں نے حکومت سے خواہش کی کہ خود اپنے گھر کی اصلاح کریں کیونکہ کانگریس ارکان پارلیمنٹ ہی کارروائی کو متاثر کرنے میں پیش پیش ہیں۔

اجلاس کی تفصیلات کے بارے میں سرکاری طور پر حکومت یا بی جے پی کی جانب سے کوئی تفصیلات نہیں بتائی گئی لیکن سمجھا جاتاہیکہ اہم بلس بشمول فرقہ وارانہ تشدد بل اور اینٹی کرپشن بل پر تبادلہ خیال ہوا۔ ذرائع نے بتایا کہ حکومت نے سیما ۔ آندھرا علاقہ کیلئے پیاکیج کا اعلان کیا ہے لیکن بی جے پی چاہتی ہیکہ بل میں اس کی صراحت کی جائے۔ بی جے پی ترجمان پرکاش جاودیکر نے کہا کہ تلنگانہ کے قیام کے تعلق سے پارٹی اپنے عہد پر قائم ہے اور ہم چاہتے ہیں کہ سیما ۔ آندھرا علاقہ کے ساتھ بھی انصاف کیا جائے۔ ذرائع کے مطابق حکومت تاحال یہ فیصلہ نہیں کرپائی ہیکہ تلنگانہ بل کو پارلیمنٹ میں کب پیش کیا جائے۔ اسے سب سے پہلے لوک سبھا میں پیش کیا جانا ضروری ہے کیونکہ حکومت نے راجیہ سبھا میں پہلے متعارف کرنے کا منصوبہ بنایا تھا تاہم اسے رقمی بل قرار دینے کی وجہ سے اب ایسی کوئی گنجائش نہیں رہی۔ یہ امکان بھی ظاہر کیا جارہا ہیکہ حکومت کل لوک سبھا میں تلنگانہ بل پیش کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT