Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ تلگودیشم کے بحران پر چندرا بابو نائیڈو کا غور و خوض

تلنگانہ تلگودیشم کے بحران پر چندرا بابو نائیڈو کا غور و خوض

بیرونی دورہ سے واپسی کے بعد کئی قائدین سے تبادلہ خیال ۔ آج امراوتی پہونچنے کی ہدایت
حیدرآباد /27 اکٹوبر ( سیاست نیوز ) تلگودیشم رکن اسمبلی ریونت ریڈی کا مسئلہ اور تلنگانہ تلگودیشم پارٹی کا بحران آندھراپردیش کے دارالحکومت امراوتی منتقل ہوگیا ہے ۔ 28 اکٹوبر کو آندھراپردیش پہونچنے پارٹی سربراہ چندرا بابو نائیڈو نے تلنگانہ قائدین کو ہدایت دی ۔ بیرونی ممالک کے دورے سے حیدرآباد پہونچنے والے سربراہ تلگودیشم و چیف منسٹر آندھراپردیش چندرا بابو نائیڈو نے آج لیک ویو گیسٹ ہاوز میں تلنگانہ تلگودیشم پارٹی کے پیولٹ بیورو اور سنٹرل کمیٹی کے ارکان سے ملاقات کی ۔ اس اجلاس میں صدر تلنگانہ تلگودیشم ایل رمنا ، ارکان اسمبلی ایس وینکٹ ویریا ، آر کرشنیا ، ریونت ریڈی کے علاوہ دیگر قائدین میں ایم نرسمہلو ‘ چندر شیکھر ریڈی ، سیتا اکا، اما مادھو ریڈی ، آر پرکاش ریڈی ، اروند کمار گوڑ کے علاوہ دوسروں نے شرکت کی ۔ تلگودیشم قائدین نے ریونت ریڈی کی شکایت کی ریونت ریڈی نے علیحدگی میں چیف منسٹر سے تبادلہ خیال کیا ۔ تلگودیشم کے تمام قائدین نے ریونت ریڈی پر الزام عائد کئے تاہم ریونت ریڈی نے اس پر کوئی ردعمل کا اظہار نہیں کیا اور نہ ہی پارٹی کے دوسرے قائدین کی شکایت کی ۔ چندرا بابو نائیڈو نے علیحدگی میں تھوڑی دیر ریونت ریڈی سے تبادلہ خیال کیا اور پارٹی کے تمام قائدین کو 28 اکٹوبر کو امراوتی پہونچنے کی ہدایت دی اور وہیں تفصیلی ملاقات کا تیقن دیا ۔ ذرائع سے پتہ چلا کہ سربراہ تلگودیشم چندرا بابو نائیڈو حالیہ بحران سے ناراض ہیں ۔ بالخصوص قائدین کے ایک دوسرے کے خلاف کھلے عام تنقید اور جوابی تنقیدیں سیاسی اتحاد کے مسئلہ پر اختلاف رائے کو منظر عام پر لانے اور شخصی رائے کے ذریعہ پارٹی کو نقصان پہونچانے پر برہمی کا اظہار کیا ہے ۔ تلنگانہ تلگودیشم کے بیشتر قائدین نے ریونت ریڈی پر کانگریس سے ساز باز کرکے پارٹی کو نقصان پہونچانے کی شکایت کی ۔ دہلی میں راہول گاندھی سے ملاقات اور کانگریس میں شامل ہونے کی تردید نہ کرنے کی وجہ طلب کی ۔ تنہائی میں ریونت ریڈی کے بھی تلگودیشم قائدین کی چندرا بابو نائیڈو سے شکایت کرنے کا علم ہوا جس کی وجہ سے پارٹی صدر نے دوبارہ بات چیت کرنے قائدین کو امراوتی طلب کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT