Thursday , December 14 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ جے اے سی چیرمین کودنڈا رام گرفتار

تلنگانہ جے اے سی چیرمین کودنڈا رام گرفتار

پولیس اور قائدین میں بحث و تکرار ، شہیدان تلنگانہ اسپورتی یاترا کو روکا نہیں جاسکتا : کودنڈا رام
حیدرآباد۔/14اکٹوبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ جے اے سی کے صدر نشین پروفیسر کودنڈا رام کو پولیس نے آج شہیدان تلنگانہ اسپورتی یاترا کے سلسلہ میں جنگاؤں جانے سے روک دیا اور حیدرآباد کے مضافاتی علاقہ میں حراست میں لے لیا گیا۔ کودنڈا رام کی جنگاؤں روانگی سے لیکر گرفتاری تک بعض مقامات پر پولیس اور جے اے سی قائدین کے درمیان بحث و تکرار ہوئی اور مقامی عوام نے پولیس کے رویہ کے خلاف احتجاج کیا۔ عوام نے کودنڈا رام کی گرفتاری پر ناراضگی جتائی۔ تاہم میڑچل کے قریب نارا پلی میں پولیس کی بھاری جمعیت نے کودنڈا رام کی گاڑی کو روک لیا اور کافی بحث و تکرار کے بعد انہیں حراست میں لے لیا گیا۔ کودنڈا رام اور ان کے ساتھیوں کو قریبی پولیس اسٹیشن منتقل کردیا گیا۔ پروفیسر کودنڈا رام پروگرام کے مطابق آج جنگاؤں سے اپنی اسپورتی یاترا کا آغاز کرنے والے تھے تاہم وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کے ٹی راما راؤ کے ورنگل دورہ کے پیش نظر پولیس نے اس کی اجازت نہیں دی اور کودنڈا رام کو راستہ میں ہی احتیاطی حراست میں لے لیا گیا۔ قبل ازیں صبح میں کودنڈا رام کی قیامگاہ واقع تارناکہ پر کشیدگی دیکھی گئی جب پولیس کی بھاری جمعیت نے ان کی قیامگاہ کو گھیر لیا تھا۔ جے اے سی قائدین بڑی تعداد میں وہاں پہنچ گئے اور پولیس کو حراست میں لینے سے روک دیا۔ کودنڈا رام جب اپنے ساتھیوں کے ہمراہ جنگاؤں کیلئے نکل پڑے تو انہیں راستہ میں روک لیا گیا۔ جیسے ہی سادہ لباس میں پولیس کے جوان ان کی گاڑی کے قریب پہنچے کودنڈا رام نے گاڑی سے اترنے سے انکار کردیا اور کہا کہ احتیاطی حراست میں لینے کیلئے سپریم کورٹ کے قواعد کی خلاف ورزی کی جارہی ہے۔ انہوں نے اریسٹ وارنٹ پیش کرنے تک پولیس سے تعاون نہ کرنے کا تہیہ کیا۔ انہیں پولیس عہدیداروں نے سمجھانے منانے کی کوشش کی اور کہا کہ پولیس اسٹیشن میں تمام کاغذات حوالے کئے جائیں گے۔ جے اے سی قائدین نے یونیفارم کے بغیر ملازمین پولیس کی جانب سے گرفتاری کی مذمت کی جس پر سادہ لباس میں موجود پولیس ملازمین گاڑی سے ہٹ گئے اور ڈریس میں موجود عہدیدار پہنچے۔ کودنڈا رام نے عہدیداروں سے کہا کہ انہیں حراست میں لینے کے احکامات پیش کئے جائیں۔ جے اے سی کے احتجاج کے دوران انہیں پولیس کی گاڑی میں منتقل کرتے ہوئے پولیس اسٹیشن لے جایا گیا۔ اس موقع پر میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کودنڈا رام نے کہا کہ حکومت کی جانب سے لاکھ رکاوٹیں پیدا کی جائیں اور گرفتاریاں عمل میں لائی جائیں لیکن شہیدان تلنگانہ اسپورتی یاترا کو روکا نہیں جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ تشکیل تلنگانہ کے وقت عوام نے جو خواب دیکھا تھا اس پر عمل آوری میں ٹی آر ایس حکومت ناکام ہوچکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسپورتی یاترا کو ناکام بنانے کیلئے کل رات سے ہی گرفتاریوں کا آغاز ہوچکا ہے۔ ورنگل، جنگاؤں، محبوب آباد اور دیگر علاقوں کے جے اے سی قائدین کو رات میں حراست میں لے لیا گیا۔ جے اے سی قائدین نے الزام عائد کیا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ جے اے سی یاترا کو ناکام بنانے کیلئے سازشیں کررہے ہیں۔ واضح رہے کہ جے اے سی نے حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف ریاست گیر سطح پر شہیدان تلنگانہ اسپورتی یاترا کا آغاز کیا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT