Wednesday , December 13 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ حکومت عوام کی بہتر خدمت کیلئے پابند عہد

تلنگانہ حکومت عوام کی بہتر خدمت کیلئے پابند عہد

نظم و نسق میں اصلاحات کا عمل جاری رہے گا ، اسمبلی میںچیف منسٹر چندر شیکھر راؤ کا بیان
٭ نئے 21 اضلاع کی تشکیل کی مدافعیت
٭ چھوٹے اضلاع میں ہر غریب خاندان کی بہبود یقینی

حیدرآباد /17 نومبر ( سیاست نیوز ) چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ ان کی حکومت شہریوں کو بہتر خدمت فراہم کرنے کی پابند عہد ہے ۔ ریاست تلنگانہ میں نظم و نسق میں اصلاحات کا عمل جاری رہے گا ۔ ریاستی اسمبلی میں آج بیان دیتے ہوئے چیف منسٹر نے ریاست میں 21 نئے اضلاع کے قیام کی پرزور مدافعیت کی اور کہا کہ جامع نظم و نسق اصلاحات کے ذریعہ ہی ریاست کے تمام علاقوں میں مقیم تمام طبقات کے عوام کی توقعات اور ضروریات کو پورا کیا جاسکتا ہے ۔ کے سی آر نے کہا کہ نئے اضلاع کے قیام کے بعد مختلف سطحوں پر عوام کو خاصکر غریب خاندانوں کی ترقی اور بہبود کو یقینی بنایا جارہا ہے ۔ چھوٹے اضلاع میں کلکٹرس کو عوام تک پہونچنے میں آسانی ہوگی اور ریاست کے عوام میں نئے نظم و نسق کے ساتھ یونٹس قائم کرنے کا خیرمقدم کیا ہے ۔ ہر ضلع میں نوجوان حرکیاتی کلکٹرس کا تقرر کیا جارہا ہے ۔ ضلع نظم و نسق کے سینئیر عہدیدار بھی عوام تک پہونچ کر سرکاری پروگراموں کی عمل آوری پر کڑی نظر رکھیں گے ۔ چیف منسٹر نے اپنی حکومت کے بہترین پروگراموں جیسے مشن بھاگریتا ، مشن کاکتیہ اراضی سروے ، کے سی آر کی تقسیم ، کلیان لکشمی ، شادی مبارک پروگرام کا ذکر کیا ۔ انہوں نے کہا کہ ان کی حکومت ہر ضلع میں بہتر نظم و نسق چلانے کیلئے نئی عمارتوں کی تعمیر کو منظوری دی گئی ہے ۔ چیف منسٹر نے دعوی کیا کہ تلنگانہ کے تاریخی نظم و نسق اصلاحات سے ترقی ہو رہی ہے ۔ ہر ضلع میں نئے نظم و نسق دفاتر کے قیام کا ابھی ایک سال پورا نہیں ہوا ہے لیکن ان کی کارکردگی سے عوام خوش ہیں ۔ عوام بھی اپنے کاموں کی تکمیل کیلئے مختلف سرکاری دفاتروں کو آسانی سے رجوع ہو رہے ہیں ۔ سینئیر ضلع آفیسرس عوام کی شکایت کا ازالہ کرنے کیلئے ہر دم کوشاں ہیں ۔

پسماندہ ترین طبقات کی ترقی کے لئے 1000کروڑ روپئے الاٹ
حیدرآباد /17 نومبر ( سیاست نیوز ) تلنگانہ حکومت نے پسماندہ ترین طبقات کی ترقی کے لئے سال 2017-18مالی سال میں 1000کروڑ روپئے الاٹ کئے ہیں۔وزیر بہبود پسماندہ طبقات جوگورامنا نے یہ بات بتائی ۔انہوں نے تلنگانہ اسمبلی میں مختلف ارکان کی جانب سے پوچھے گئے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہاکہ ریاستی حکومت ان طبقات کی ترقی کے لئے پابند عہد ہے اور ان کی ترقی کے لئے تاحال 280کروڑ روپے جاری کئے گئے ہیں تاہم پسماندہ ترین طبقات کی نشاندہی کامسئلہ الجھن کا شکار ہے تاہم اس کے پیش نظر حکومت نے تلنگانہ بی سی کمیشن سے 6مئی کو اپیل کی کہ وہ اس سلسلہ میں اندرون 6ماہ اپنی رپورٹ حوالے کرے تاہم بی سی کمیشن نے اکتوبر میں اس مدت کے اختتام کے بعد مزید وقت دینے کی خواہش کی ہے اور اس کمیشن کی رپورٹ جلد ملنے کے ساتھ ہی حکومت اس کے مطابق مناسب اقدامات کرے گی۔

TOPPOPULARRECENT