Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ حکومت پر اسمبلی میں غیر جمہوری طریقہ اختیار کرنے کا الزام

تلنگانہ حکومت پر اسمبلی میں غیر جمہوری طریقہ اختیار کرنے کا الزام

حکومت کی من مانی ، ارکان کی معطلی پر قائد اپوزیشن کے جانا ریڈی کا ردعمل
حیدرآباد ۔ 17 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز اسمبلی مسٹر کے جانا ریڈی نے الزام عائد کیا کہ اسمبلی میں حکومت غیر جمہوری طریقہ کار اختیار کررہی ہے ۔ ایوان کی کارروائی سے ایک دن کے لیے کانگریس ارکان اسمبلی کو معطل کیے جانے کے بعد ایوان میں اپنا اظہار خیال کرتے ہوئے مسٹر کے جانا ریڈی قائد اپوزیشن نے کہا کہ ایوان میں ارکان کی اکثریت رکھتے ہوئے حکومت اپنی من مانی انداز میں اقدامات کررہی ہے جو بالکلیہ طور پر نامناسب طریقہ ہے ۔ انہوں نے اپنی پارٹی کے ارکان اسمبلی کو معطل کیے جانے پر حکومت پر اپنے عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ایوان میں گڑبڑ اور شور و غل ہونے پر کم از کم اپوزیشن قائد کو بات کرنے کا موقعہ تک فراہم نہیں کیا گیا ۔ ایوان میں ارکان کے ساتھ اسپیکر اسمبلی مناسب انداز میں مساویانہ طور پر دیکھ رہے ہیں یا نہیں ۔ اپنے شک و شبہ کا اظہار کیا اور کہا کہ ایوان کو آنے کے بجائے عوام کے درمیان پہونچنے کے لیے صورتحال کو دیکھنے پر دل چاہ رہا ہے ۔ مسٹر جانا ریڈی نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بی اے سی اجلاس میں کئے گئے فیصلہ کے مطابق عمل کرنے کا اظہار کرنے والی حکومت دئیے گئے تیقنات پر آیا عمل کررہی ہے ؟ قائد اپوزیشن نے الزام عائد کیا کہ ڈپٹی لیڈر ملو بٹی وکرامارک اپنی نشست سے ہٹ کر ایوان کے وسط میں نہ جانے کے باوجود انہیں بھی ایوان کی کارروائی سے معطل کرنا انتہائی غیر منصفانہ اقدام ہے۔ اگر اسپیکر اسمبلی پہلے ہی اس بات کا تیقن دیتے کہ وقفہ سوالات کے بعد اس مسئلہ پر پیش کردہ تحریک التوا پر غور کیا جائے گا ۔ ایوان میں یہ صورتحال ہی پیدا نہیں ہوتی ۔ مسٹر جانا ریڈی نے اپنے شدید ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے ارکان اسمبلی کی معطلی کے خلاف بطور احتجاج ایوان سے واک آوٹ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے ایوان سے باہر چلے گئے ۔ بعد ازاں مسٹر جانا ریڈی کے حکومت پر عائد کردہ الزامات پر اپنے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے وزیر امور مقننہ مسٹر ٹی ہریش راؤ نے سخت مذمت کی اور کہا کہ سابق حکومت کانگریس نے ایوان میں جئے تلنگانہ کا نعرہ لگانے پر ٹی ار ایس ارکان اسمبلی کو ایوان سے معطل کیا جاتا تھا ۔ انہوں نے مسٹر کے جانا ریڈی پر سخت ریمارکس کرتے ہوئے کہا کہ سابق میں جب وہ وزیر تھے تب انہوں نے ایوان میں پائی جانے والی صورتحال کو صرف تماشائی کی طرح دیکھ کر کم از کم لب کشائی بھی نہیں کیا کرتے تھے ۔ پارلیمنٹ کی طرح کانگریس پارٹی ارکان اسمبلی کی کارروائی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی جو کوشش کی جارہی ہے جو مناسب بات نہیں ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT