Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ سے تھلیسمیا کے خاتمہ کو یقینی بنانے عطیہ کا اعلان

تلنگانہ سے تھلیسمیا کے خاتمہ کو یقینی بنانے عطیہ کا اعلان

شعور بیداری مہم ، وزیر صحت و طبابت سی لکشما ریڈی کا خطاب

شعور بیداری مہم ، وزیر صحت و طبابت سی لکشما ریڈی کا خطاب
حیدرآباد 14 جون (سیاست نیوز) وزیر صحت و طبابت تلنگانہ مسٹر سی لکشما ریڈی نے بچوں میں پائے جانے والے مہلک اور جان لیوا مرض تھلیسمیا سے سماج کے تمام طبقات کو محفوظ رکھنے اور ریاست تلنگانہ سے مرض تھلیسمیا کے مکمل خاتمہ کو یقینی بنانے کے لئے وہ تھلیسمیا اینڈ سکل سیل سوسائٹی کو اپنی ایک ماہ کی تنخواہ کا عطیہ دینے کے علاوہ سوسائٹی کو حکومت کی جانب سے تمام تر سہولتیں مہیا کرنے کا پیشکش کیا۔ وہ آج یہاں تھلیسمیا اینڈ سکل سیل سوسائٹی کے زیراہتمام مرض تھلیسمیا سے متعلق عوام میں شعور بیداری مہم “Mission 10 Million” پروگرام کے افتتاح کے بعد بحیثیت مہمان خصوصی مخاطب تھے۔ اُنھوں نے کہاکہ تھلیسمیا جیسے مہلک مرض اور اس سے ہونے والی اموات سے متعلق عوام کی کثیر تعداد ناواقف ہے جس کے نتیجہ میں اس مرض سے متاثرہ مریضوں کی شناخت اور مریضوں کو بروقت طبی امداد کی فراہمی دشوار کن ثابت ہورہی ہے اور کہاکہ مرض تھلیسمیا سے متاثرہ بچوں کو ہر ماہ جسم میں خون چڑھانے کے علاوہ بروقت مؤثر طبی امداد پہنچانے میں غفلت برتنے پر متاثرہ مریض کے فوت ہوجانے کا بھی خطرہ لاحق ہوجاتا ہے۔ اس لئے سماج کے ہر فرد پر یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اس مرض سے متعلق عوام میں شعور بیدار کرنے کے ساتھ ساتھ مریضوں کو درکار خون کا عطیہ دینے کے علاوہ تھلیسمیا اینڈ سکل سیل سوسائٹی سے بھرپور تعاون کرتے ہوئے انسانی ہمدردی اور جذبہ خدمت خلق کا ثبوت دیں تاکہ مصیبت زدہ مریضوں کو راحت پہنچائی جاسکے۔ اُنھوں نے تیقن دیا کہ مرض تھلیسمیا سے متاثرہ تمام سفید راشن کارڈ ہولڈر مریضوں کو آروگیہ شری اسکیم اور چیف منسٹر ریلیف فنڈ سے بھرپور امداد کیلئے ممکنہ اقدامات کئے جائیں گے۔ اُنھوں نے تھلیسمیا سکل سیل سوسائٹی کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے بھرپور ستائش کی۔ انھوں نے بتایا کہ عثمانیہ جنرل ہاسپٹل میں کڑپہ سے تعلق رکھنے والے محمد شریف کی لیور ٹرانسپاریٹی کی گئی جبکہ اس کے اخراجات کا بوجھ غریب عوام کے دسترس سے باہر ہے۔ اسی طرح نمس ہاسپٹل میں بھی بون میارو ٹرانسپاریٹی کی سہولت دی جارہی ہے جس سے عوام استفادہ حاصل کریں۔ اس موقع پر سابق ڈی جی پی آندھراپردیش مسٹر ایچ جے دورا نے اس مرض پر قابو پانے کیلئے حکومت کی جانب سے مرض سے متعلق عوام میں شعور بیدار کرنے کیلئے تشہیر کی مساعی کی جائے۔ اس موقع پر مسٹر وائی ایس آر مورتی، ٹالی ووڈ ڈائرکٹر مسٹر بھوپتی سرینواس، فلم اداکارہ مس پرانیتا سبھاش نے بھی مخاطب کیا۔ قبل ازیں صدر تھلیسمیا اینڈ سکل سیل سوسائٹی مسٹر چندرا کانت اگروال، نائب صدر شریمتی کے رتناولی، سکریٹری شریمتی ڈاکٹر سمن جین، جوائنٹ سکریٹری مسٹر علیم بیگ نے سوسائٹی کا تعارف پیش کیا جبکہ ڈاکٹر عذرا فاطمہ جو مرض تھلیسمیا سے متاثرہ ہیں جو کلینکل سائیکالوجی سے پی ایچ ڈی کررہی ہیں اپنے دور حیات کی دکھ بھری داستان سنائی۔ بعدازاں وزیر صحت و طبابت نے سوسائٹی کو اپنے خون کا عطیہ دیا۔

TOPPOPULARRECENT