تلنگانہ قانون سازاسمبلی و کونسل اجلاس غیرمعینہ مدت کیلئے ملتوی

93 ارکان کی تقاریر،11 سرکاری بلس کی منظوری، 9 مختلف مسائل پرمباحث
حیدرآباد۔17 نومبر (سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز اسمبلی اور کونسل کا اجلاس آج غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردیا گیا۔ حکومت نے 50 دن تک سرمائی اجلاس منعقد کرنے کا اعلان کیا تھا تاہم آج دوپہر اچانک دونوں ایوان غیر معینہ مدت کے لیے ملتوی کردیئے گئے۔ پروگرام کے مطابق آج دونوں ایوانوں کے فلور لیڈرس کا اسپیکر اور صدرنشین کونسل کے پاس اجلاس منعقد ہونے والا تھا تاکہ اسمبلی کے ایجنڈے کو قطعیت دی جاسکے۔ یہ اجلاس منعقد نہیں ہوا تاہم حکومت نے دونوں ایوانوں کو ملتوی کرنے کا فیصلہ کرلیا۔ دونوں ایوان 16 دن تک جاری رہے۔ 27 اکٹوبر کو اسمبلی اور کونسل کے سرمائی اجلاس کا آغاز ہوا تھا۔ سرمائی اجلاس کو طویل کرنے کے سلسلہ میں برسر اقتدار اور اپوزیشن دونوں ارکان ذہنی طور پر تیار نہیں تھے۔ اسمبلی کی کارروائی 16 دنوں میں 69 گھنٹے 25 منٹ جاری رہی۔ 11 مختلف موضوعات پر مباحث کا اہتمام کیا گیا اور ایوان نے 11 سرکاری بلس کو منظوری دی ہے۔ اہم منظورہ بلس میں اردو کو دوسری سرکاری زبان کا بل بھی شامل ہے۔ مختصر مباحث کے تحت جن موضوعات پر بحث اور حکومت نے جواب دیا ان میں انتظامی اصلاحات، اقامتی اسکولس، سرکاری اسکولوں میں انفراسٹرکچر کی فراہمی، فیس ری ایمبرسمنٹ، سرکاری ملازمتوں میں تقررات، سرکاری جائیدادوں پر تقررات، کسانوں کی سمیتیاں، اقلیتی بہبود، کے سی آر کٹس، 24 گھنٹے کسانوں کو بلا وقفہ برقی کی سربراہی اور دیگر شامل ہیں۔ قانون ساز کونسل میں 50 گھنٹے 18 منٹ تک کارروائی جاری رہی۔ 123 سوالات کے جواب دیئے گئے۔ 21 سوالات کا جواب ایوان میں تحریری طور پر پیش کردیا گیا۔ وزراء کی جانب سے دو بیانات دیئے گئے جبکہ 93 ارکان نے تقاریر کی۔ 11 سرکاری بل منظور کیئے گئے اور 9 مختلف مسائل پر مختصر مباحث ہوئے۔

TOPPOPULARRECENT