Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں انجینئرنگ کیلئے علحدہ انٹرنس پر ازسرنو جائزہ لینے کا اعلان

تلنگانہ میں انجینئرنگ کیلئے علحدہ انٹرنس پر ازسرنو جائزہ لینے کا اعلان

نشستیں کم امیدوار زیادہ، پی اجئے کمار کے سوال پر وزیرتعلیم کے سری ہری کا جواب

نشستیں کم امیدوار زیادہ، پی اجئے کمار کے سوال پر وزیرتعلیم کے سری ہری کا جواب
حیدرآباد۔/15مارچ، ( سیاست نیوز) ڈپٹی چیف منسٹر و وزیر تعلیم کڈیم سری ہری نے کہا کہ تلنگانہ حکومت انجینئرنگ کیلئے علحدہ انٹرنس کے انعقاد کے فیصلہ کا از سر نو جائزہ لے گی، کیونکہ نشستوں کی تعداد سے کہیں زائد امیدوار موجود ہیں لہذا بعض گوشوں نے علحدہ انٹرنس کے انعقاد کو غیر ضروری قرار دیا ہے۔ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران کانگریس کے پی اجئے کمار کے سوال پر سری ہری نے کہا کہ تلنگانہ طلبہ کیلئے حکومت نے علحدہ ایمسیٹ کے انعقاد کا فیصلہ کیا ہے اور اس پر عمل آوری شروع ہوچکی ہے۔ اجئے کمار نے کہا کہ علحدہ انٹرنس کے انعقاد کے سبب طلبہ کو مشکلات کا سامنا ہے کیونکہ انہیں تلنگانہ کے علاوہ آندھرا پردیش حکومت کے ایمسیٹ کو بھی لکھنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ انجینئرنگ کے شعبہ میں تلنگانہ میں امیدواروں سے زیادہ نشستیں موجود ہیں لہذا اس کے لئے انٹرنس کے انعقاد کی کوئی ضرورت باقی نہیں رہی۔ میڈیسن کی نشستوں کیلئے ہی صرف ایمسیٹ منعقد کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے جاننا چاہا کہ ریاست کی تقسیم کے بعد کونسی یونیورسٹی میڈیسن کی نشستوں کو الاٹ کرے گی۔ ریاست کی تقسیم کے بعد این ٹی آر ہیلت یونیورسٹی آندھرا پردیش کا حصہ بن چکی ہے جبکہ کالوجی نارائن راؤ کے نام سے تلنگانہ میں جو ہیلت یونیورسٹی قائم کی گئی اس میں ابھی تک باقاعدہ وائس چانسلر اور رجسٹرار کا تقرر نہیں کیا گیا۔ ان حالات میں کس طرح تلنگانہ میں میڈیسن کی نشستیں الاٹ کی جائیں گی۔ کڈیم سری ہری نے اعتراف کیا کہ تلنگانہ میں انجینئرنگ کی نشستوں کی تعداد طلبہ سے زیادہ ہے لہذا حکومت انجینئرنگ کیلئے علحدہ ایمسیٹ کے انعقاد کا از سر نو جائزہ لے گی۔

TOPPOPULARRECENT