Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں برقی شرحوں اور آر ٹی سی کرایوں میں اضافہ یقینی

تلنگانہ میں برقی شرحوں اور آر ٹی سی کرایوں میں اضافہ یقینی

حکومت کی منظوری ، 100 یونٹ سے زائد استعمال پر اضافی چارجس
حیدرآباد ۔ 22 ۔ جون (سیاست نیوز) ریاست میں برقی شرحوں اور آر ٹی سی کرایوں میں اضافہ یقینی دکھائی دے رہا ہے ۔ کیونکہ حکومت نے اضافہ کو منظوری دیدی ہے۔100 یونٹ تک برقی استعمال کرنے والے صارفین کے چارجس میں کوئی اضافہ نہیں ہوگا جبکہ 100یونٹ سے زائد پر معمولی اضافہ کی تجویز ہے۔ پلے ویلوگولو بس کرایہ میں 30 کیلو میٹر تک ایک روپیہ اور 30 کیلو میٹر سے زائد سفر پر 2 روپئے ا ضافہ کی تجویز ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے برقی عہدیداروں کو ہدایت دی کہ گھریلو اور عوام پر بوجھ میں اضافہ کئے بغیر برقی نقصانات کی پابجائی کے اقدامات کئے جائیں۔ چیف منسٹر نے آج برقی اور آر ٹی سی شعبہ جات کی کارکردگی کا جائزہ لیا اور دونوں اداروں کو نقصانات سے بچانے کیلئے مختلف تجاویز پر غور کیا گیا ۔ اجلاس میں برقی شرحوں میں اضافہ کے سلسلہ میں عہدیداروں نے چیف منسٹر کو مختلف تجاویز پیش کیں۔ چیف منسٹر نے ہدایت دی کہ عام آدمی اور گھریلو صارفین پر مزید کسی بوجھ میں ا ضافہ کئے بغیر برقی شرحوں میں اضافہ کیا جائے۔ چیف منسٹر نے ہدایت دی کہ 100یونٹ سے کم برقی خرچ کرنے والوں پر شرح میں کوئی اضافہ نہ کیا جائے ۔ 100 یونٹ سے زائد برقی کا استعمال کرنے والے صارفین پر معمولی اضافہ کی تجویز پیش کی۔ ریاست میں 86 لاکھ برقی کنکشن  ہیں جن میں 60 لاکھ کنکشن کے صارفین 100 یونٹ سے کم برقی استعمال کرتے ہیں۔ چیف منسٹر نے کہا کہ اس فیصلہ سے صارفین کی اکثریت اضافی بوجھ سے محفوظ رہے گی۔ صنعتی شعبہ کیلئے 10 فیصد تک برقی شرح میں اضافہ کی تجویز پر غور کیا گیا ہے۔ تاہم چیف منسٹر نے 10 فیصد کے بجائے 7 فیصد تک اضافہ کی تجویز پیش کی۔ اجلاس میں چیف منسٹر نے برقی سربراہی کے موقف کو بہتر بنانے کی ہدایت دی اور کہا کہ حکومت گھریلو اور صنعتی صارفین کو موثر برقی کی سربراہی کی پابند ہے۔ حکومت نے بہتر برقی کی سربراہی کیلئے تلنگانہ کے دو ڈسکامس اور ٹرانسکو کیلئے 2144 کروڑ کا قرض حاصل کیا ہے۔ عہدیداروں نے بتایا کہ کسانوں کو 9 گھنٹے برقی سربراہ کی جارہی ہے

 

جس کیلئے 2400 کروڑ روپئے خرچ کرتے ہوئے سب اسٹیشنس تعمیر کئے گئے ۔ چیف منسٹر نے کہا کہ آر ٹی سی اور برقی شعبہ جاری کو نقصانات سے ابھارنے کی ضرورت ہے ۔ انہوںنے کہا کہ جب تک عوامی ادارے نقصانات سے باہر نہیں آئیں گے ، اس وقت تک بہتر خدمت نہیں کی جاسکتی۔ جائزہ اجلاس میں ریاستی وزیر ٹی ناگیشور راؤ  ، آر ٹی سی کے صدرنشین ایس ست نارائنا ، چیف سکریٹری ڈاکٹر راجیو شرما ، چیف منسٹر آفس کے پرنسپل  سکریٹری نرسنگ راؤ ، پرنسپل سکریٹری آر اینڈ ڈی سنیل شرما ، جین کو مینجنگ ڈائرکٹر پربھاکر راؤ ، تلنگانہ پاور ڈسٹری بیوشن لمٹیڈ کے مینجنگ ڈائرکٹر رگھوما ریڈی اور آر ٹی سی کے مینجنگ ڈائرکٹر رمنا راؤ اور دیگر عہدیدار شریک تھے۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ سابقہ حکومتوں کیجانب سے برقی اور آر ٹی سی کو نظر انداز کردیا گیا جس کے نتیجہ میں نقصان میں مسلسل اضافہ ہوا ہے ۔ آر ٹی سی عہدیداروں نے بتایا کہ ادارہ پر 2275 کروڑ کا خرچ ہے اور نقصانات میں اضافہ ہورہا ہے۔ چیف منسٹر نے کہا کہ عوام کے تعاون کے بغیر ان اداروں کو نقصانات سے بچانا ممکن نہیں ہے۔ عہدیداروں نے آر ٹی سی کے کرایوں میں اضافہ کی تجویز پیش کی ۔ چیف منسٹر نے عام شہریوں کے سفر سے متعلق پلے ویلوگو بسوں کے کرایوں میں 30 کیلو میٹر تک ایک روپئے اور 30 کیلو میٹر کے بعد 2 روپئے اضافہ کی تجویز پیش کی ہے۔ برقی اور آر ٹی سی کی شرحوں میں اضافہ کے بارے میں قطعی فیصلہ کل جمعرات کو کیا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT