Monday , August 20 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں بی جے پی کا کوئی مستقبل نہیں : ناگم جناردھن ریڈی

تلنگانہ میں بی جے پی کا کوئی مستقبل نہیں : ناگم جناردھن ریڈی

ٹی آر ایس کی کشتی میں چھید ، کانگریس سے ربط رکھنے والی بی جے پی قائد کا سنسنی خیز ریمارک
حیدرآباد ۔ 15 ۔ جنوری : ( سیاست نیوز ) : کانگریس سے رابطے میں رہنے والے بی جے پی کے قائد ناگم جناردھن ریڈی نے سنسنی خیز ریمارک کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ میں بی جے پی کا کوئی مستقبل نہیں ہے ۔ ٹی آر ایس کی کشتی میں چھید پڑ چکا ہے ۔ وہ بہت جلد اپنے مستقبل کا اعلان کریں گے ۔ ضلع محبوب نگر سے اسمبلی میں 5 مرتبہ نمائندگی کرنے اور تلگو دیشم کے دور حکومت میں مختلف وزارتوں پر خدمات انجام دینے والے ناگم جناردھن ریڈی نے کہا کہ بی جے پی میں انہیں گھٹن محسوس ہورہی ہے ۔ جس پارٹی میں عزت نفس کا احترام نہیں ہوتا وہ اُس پارٹی میں رہنا بھی نہیں چاہتے ۔ ان کے حامی بھی انہیں بی جے پی سے مستعفی ہوجانے پر دباؤ ڈال رہے ہیں ۔ مرکز اور ملک کے دوسری ریاستوں میں اپنے اثر و رسوخ کے نقوش چھوڑنے والی بی جے پی کا تلنگانہ میں کوئی مستقبل نہیں ہے کیوں کہ تلنگانہ کی بی جے پی قیادت بی جے پی کی قومی قیادت کو گمراہ کررہی ہے ۔ انہیں چیف منسٹر ان کے ارکان خاندان اور ٹی آر ایس کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف آواز اٹھانے سے روکا جارہا ہے ۔ تلنگانہ میں خفیہ طور پر ٹی آر ایس اور بی جے پی کا اتحاد ہوچکا ہے ۔ ناگم جناردھن ریڈی نے کہا کہ وہ 36 سال سے سیاسی زندگی میں سرگرم ہے مگر بی جے پی میں انہیں نظر انداز کیا جارہا ہے جس سے ان کے حامی سخت ناراض ہیں وہ اپنے حامیوں سے صلاح و مشورہ کرنے کے بعد اپنے مستقبل کی حکمت عملی کا اعلان کریں گے ۔ ریاست میں حکمران ٹی آر ایس عوامی اعتماد سے محروم ہوچکی ہے اور اس کی تلنگانہ میں الٹی گنتی شروع ہوچکی ۔ کار میں گنجائش سے زیادہ قائدین سوار ہوچکے ہیں ۔ جس سے کار بے قابو ہوچکی ہے ۔ کوئی بھی فیصلہ ٹی آر ایس کے حق میں نقصان دہ ہی ثابت ہوگا ۔ ریاست میں ٹی آر ایس کا کام ہوچکا ہے ۔ 2019 کے عام انتخابات میں ٹی آر ایس کو شکست ہوجائے گی ۔ ضلع محبوب نگر کے اسمبلی حلقہ ناگر کرنول سے 5 مرتبہ اسمبلی کے لیے منتخب ہونے والے ناگم جناردھن ریڈی تلگو دیشم کے دور حکومت میں مختلف وزارتی قلمدان پر کام کیا ۔ علحدہ تلنگانہ ریاست کی تحریک کے دوران تلگو دیشم سے مستعفی ہو کر 2012 میں ’ تلنگانہ نگارا ‘ پارٹی تشکیل دی ۔ منعقدہ ضمنی انتخاب میں بحیثیت آزاد امیدوار مقابلہ کرتے ہوئے کامیابی حاصل کی ۔ بعد ازاں بی جے پی میں شمولیت اختیار کی 2014 کے عام انتخابات میں حلقہ لوک سبھا محبوب نگر سے بحیثیت بی جے پی امیدوار مقابلہ کر کے شکست سے دوچار ہوگئے ۔ گذشتہ ایک سال سے بی جے پی کی سیاسی سرگرمیوں سے اپنے آپ کو دور رکھا ۔ ناگم جناردھن ریڈی کی بہت جلد کانگریس میں شمولیت کی افواہیں گشت کررہی ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT