تلنگانہ میں تہذیب و ثقافت کے فروغ کیلئے حکومت سنجیدہ

محبوب نبر /22 اپریل ( ذریعہ فیاکس ) ریاستی حکومت اپنے قیام سے ہی تلنگانہ کی تہذیب و ثقافت پر اپنی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے اور چیف منسٹر صاحب کو ابتداء سے ہی تلنگانہ کی تہذیب و ثقافت سے محبت ہے ۔ وہ چاہتے بھی ہیں کہ قدیم تہذیب روایات کو پروان چڑھایا جائے تاکہ ریاست میں امن و امان اتحاد و اتفاق کی فضاء عام ہو اور یہ ریاست اپنے خواب ’’ سنہر

محبوب نبر /22 اپریل ( ذریعہ فیاکس ) ریاستی حکومت اپنے قیام سے ہی تلنگانہ کی تہذیب و ثقافت پر اپنی توجہ مرکوز کئے ہوئے ہے اور چیف منسٹر صاحب کو ابتداء سے ہی تلنگانہ کی تہذیب و ثقافت سے محبت ہے ۔ وہ چاہتے بھی ہیں کہ قدیم تہذیب روایات کو پروان چڑھایا جائے تاکہ ریاست میں امن و امان اتحاد و اتفاق کی فضاء عام ہو اور یہ ریاست اپنے خواب ’’ سنہرے تلنگانہ ‘‘ کی تعبیر کو پائے ان خیالات کا اظہار ڈاکٹر راجہ رام جوائنٹ ایڈیشنل کلکٹر محبوب نگر نے آج ریاست تلنگانہ کی جانب سے منعقدہ ضلع محبوب نگر کے مشاعرہ سے ضلع پریشد میٹنگ ہال میں کیا ۔ انہوں نے مزید کہاکہ اردو زبان کی شرینی نے ہر فرد کو متاثر کیا ہے اردو شاعری نے جنگ آزادی میں ساتھ ہی تحریک تلنگانہ میں بھی نمایاں کردار ادا کیا ہے آج بھی اس مشاعرہ میں شعراء اکرام کا بہترین کلام تلنگانہ سے متعلق سننے کو ملا بہت پسند آیا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ مادری زبان سے ہی ہم اپنے ثقافتی ورثہ کی حفاظت کرسکتے ہیں۔ جن میں بڑے پیمانہ پر حکومت کی جانب سے ثقافتی پروگرام منعقد کئے جائیں گے ۔ آج کا یہ پروگرام بھی دراصل اس کی تیاری کے طور پر رکھا گیا ہے ۔ قبل ازیں اس مشاعرے کا آغاز مولانا جواز مظاہری کی تلاوت قرآن سے ہوا ۔ ضیاء برہانی نے نعت پیش کی ۔ کنوینر ظہیرالدین ڈیولپمنٹ آفیسر ، ہینڈلوم و ٹکسٹائلز نے مشاعرہ کی انعقاد کے مقاصد پر روشنی ڈالی ۔ اس مشاعرے کی صدارت مولانا جواد مظاہری ، حلیم بابر نے انجام دی ۔ ڈاکٹر عزیز سہیل لکچرار نے نظامت کے فرائض خوش اسلوبی انجام دئے ۔ جن شعراء اکرام نے اپنا کلام سنایا ان میں ڈاکٹر عزیز سہیل ، ضیاء برہانی ، جلیل رضا ، تقی حسین تقی ، کلیم شیخ ، تقی احمد تقی ، اسمعیل قیصر ، جامی وجودی ، چچا پالموری ، ڈاکٹر رشید رہبر ، بابر شیخ ، صادق فریدی ، حضرت ظہیر ناصری ، ڈاکٹر خالق اختر ، حضرت نو آفاقی ، جناب حلیم بابر شامل ہیں ۔ اس موقع پر محسن خان قائد ٹی آر ایس محمد علی داشن شامل تھے ۔ رات دیر گئے مشاعرے کا اختتام ہوا ۔

TOPPOPULARRECENT