Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں سکیوریٹی آپریشن سنٹر کے قیام کا فیصلہ

تلنگانہ میں سکیوریٹی آپریشن سنٹر کے قیام کا فیصلہ

مختلف محکمہ جات کے تکنیکی امور کو محفوظ بنانے اقدام ۔ اندرون دو ماہ پیشرفت کا امکان
حیدرآباد۔24اکٹوبر (سیاست نیوز) تلنگانہ میں سائبر سیکیورٹی منصوبہ کے بعد حکومت نے فیصلہ کیا کہ سائبر سیکیورٹی امور اورحکومت کے مختلف محکمہ جات کے تکنیکی امور کو محفوظ بنانے سیکیورٹی آپریشن سنٹر قائم کیا جائے۔ محکمہ انفارمیشن ٹکنالوجی کی جانب سے تیار کردہ منصوبہ کے مطابق حکومت نے سیکیورٹی آپریشن سنٹر کو منظوری دیدی ہے اور بہت جلد اس کے قیام کیلئے اقدامات کئے جائیں گے۔ سیکیورٹی آپریشن سنٹر کے قیام کے ذریعہ ریاستی وزارت انفارمیشن ٹکنالوجی کی جانب سے تمام محکمہ جات کے تکنیکی امور‘ مسائل اور ان کی حفاظت کے علاوہ آڈٹ کا عمل انجام دیا جاتا رہے گا تاکہ ریاست کی تکنیکی ترقی کو محفوظ بنایا جاسکے ۔ ریاستی وزارت انفارمیشن ٹکنالوجی کے اقدامات کے مطابق حکومت کے محکمہ جات کے پاس محفوظ ڈاٹا کو عصری تحفظ کی فراہمی ممکن بنانے کے علاوہ ڈاٹا کی ترسیل کے عمل کو آسان بنانا ہے ۔ تلنگانہ ‘ ملک کی پہلی ریاست ہے جس نے ریاستی سطح پر منفرد سائبر پالیسی تیار کرکے روشناس کروائی ہے اور اب تلنگانہ ہی پہلی ریاست ہوگی جو ملک میں عالمی سطح کے سیکیوریٹی آپریشن سنٹر کے قیام کو یقینی بنانے اقدامات کررہی ہے ۔ مسٹر جئیش رنجن نے بتایا کہ حکومت کی منظوری کے بعد محکمہ کی جانب سے اس مرکز کے قیام کے سلسلہ میں اقدامات تیز کردیئے گئے ہیں اور آئندہ دو ماہ میں مرکز کے قیام کو قطعیت دینے کے سلسلہ میں ایجنسی کا فیصلہ کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ بہت جلد محکمہ انفارمیشن ٹکنالوجی کی جانب سے قومی و عالمی سطح پر ٹنڈر طلب کئے جائینگے ۔ اندرون دو ماہ پراجکٹ کو انجام دینے والی ایجنسی کے نام کو قطعیت دیتے ہوئے عملی کاموں کا آغاز کردیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ حکومت نے سائبر جرائم کی روک تھام کو یقینی بنانے کئے جانے والے اقدامات کے تحت یہ فیصلہ کیا ہے کہ ریاست میں سرکاری محکمہ جات اور خانگی کمپنیوں کے اشتراک کے ذریعہ ایک ایسا سائبر سیکیورٹی آپریشن سنٹر قائم کیا جائے جو کہ ملک ہی نہیں بلکہ عالمی سطح پر منفرد ثابت ہوسکے۔ انہوں نے بتایا کہ ریاستی حکومت تکنیکی ترقی اور سائبر دور سے ہم آہنگ ہونے کے علاوہ سائبر سیکیورٹی کو ممکن بنانے کے لئے ہر طرح سے تیار ہے اور اس بات کی کوشش کی جا رہی ہے کہ محفوظ سائبر اسپیس کی فراہمی کے ذریعہ خانگی کمپنیو ںکا بھی مکمل اعتباد حاصل کیا جاسکے ساتھ ہی شہریوں کو بھی سائبر حملوں سے بچایا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT