Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں لینڈ سروے ، علاقائی وقف اراضی کے تحفظ پر زور

تلنگانہ میں لینڈ سروے ، علاقائی وقف اراضی کے تحفظ پر زور

اقلیتی بہبود کے اداروں کی ناقص کارکردگی پر افسوس کا اظہار ، سید عزیز پاشاہ و دیگر کا خطاب
حیدرآباد۔24ستمبر(سیاست نیوز) دکن وقف پروٹکشن سوسائٹی کے زیر اہتمام منعقدہ اسٹیٹ کانفرنس برائے صیانت اوقاف سے خطاب کرتے ہوئے جناب سید عزیز پاشاہ سابق رکن پارلیمنٹ راجیہ سبھا وسینئر کمیونسٹ قائد نے کہاکہ حکومت کے لینڈ سروے ریکارڈ کے وقت ہمیںچاہئے کہ رضاکارانہ طور پر علاقائی وقف اراضیات کے اندراج کو سروے میںشامل کرتے ہوئے تلنگانہ کی اوقافی جائیدادوں کی حفاظت کو یقینی بنائیں ۔ معمولی غفلت ہمیںاپنی اوقافی جائیدادوں سے محروم کرسکتی ہے۔ ہماری مستعدی تلنگانہ کی اوقافی جائیدادوں کو غیرمجاز قابضین سے بچانے میںبھی کام آئے گی۔وہ آج یہاں محبو ب حسین جگر ہال میں منعقدہ اسٹیٹ کانفرنس سے مخاطب تھے۔ صدر دکن وقف پروٹکشن سوسائٹی جناب عثمان بن محمد الہاجری‘ مولانا حامد محمد خان امیرجماعت اسلامی ہند تلنگانہ واڈیشہ‘ جناب عثمان شہید ایڈوکیٹ‘ جناب منیر پٹیل‘ مقبول الہاجری کے علاوہ دیگر نے بھی خطاب کیا۔ جناب سید عزیز پاشاہ نے اپنے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور اقلیتی بہبود کے اداروں کی کارکردگی پر بھی سوالیہ نشان کھڑے کئے او رکہاکہ شہر اور اضلاع سے آنے والے درخواست گذاروں کا یہاں پر کوئی پرسان حال نہیں ہے ۔ انہوں نے اقلیتی بہبود کے اداروں بالخصوص وقف بورڈ تلنگانہ کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات میں تاخیر کو محکموں کی کارکردگی بہتر بنانے میںناکامی کی اصل وجہہ قراردیا۔جہاں پر درخواست گذار کی آوازسننے والا کوئی نہیںہے ۔ انہوںنے کہاکہ حکومت میںاقلیتی بہبودکا بجٹ ملک کی تمام ریاستوں سے آگے ہے مگر بجٹ کی رقم جاری کرنے میںکوتاہی برتی جاتی ہے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ دویاتین قسطوں میں اگر حکومت معلنہ رقم جاری کرتی ہے تو یقینی طور پر اقلیتوں کے مسائل کا حل ممکن ہے۔ لینڈ اینڈ سروے کے متعلق ایک قرارداد منظور کی گئی ہے جس میںتلنگانہ کی عوام سے رضاکارانہ طور پر مجوزہ سروے میں شامل ہوکر اوقافی جائیدادوں کی نشاندہی کی اپیل کے علاوہ حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیاگیا ہے کہ وہ محکمہ اوقاف بورڈ کی مخلوعہ جائیدادوں پر تقررات کا اعلان کرتے ہوئے محکمے کی کارکردگی میں تیزی پیدا کریں۔ جناب عثمان بن محمد الہاجری نے کہاکہ وہ بہت جلد ضلعی سطح پر دکن وقف پروٹکشن سوسائٹی کی کمیٹیوں کی تشکیل عمل میں لائیں گے او ریوم عاشورہ کے بعد ریاست کا دورہ کرتے ہوئے تمام کلکٹرس سے مقامی اوقافی جائیدادوں کی حفاظت اور بازیابی کے متعلق نمائندگی کریں گے ۔ سوسائٹی تلنگانہ میں اوقافی جائیدادوں کی حفاظت کے متعلق جامع طور پر شعور بیداری مہم بھی چلائے گا۔مولانا حامد محمد خان نے کہاکہ سوسائٹی اور دیگر تنظیموں کی جانب سے مجوزہ لینڈ سروے کے متعلق کئے جانے والے اقدامات کو جماعت اسلامی ہند تلنگانہ یونٹ کا مکمل تعاون حاصل رہے گا۔جماعت کے کارکن بھی مجوزہ مہم میںبڑھ چڑھ کر حصہ لیکر اوقافی جائیدادوں کی حفاظت میںاہم رول ادا کرنے کی کوشش کریں گے ۔اس سے متعلق عوام میںشعو ر بیداری بھی کریں گے۔انہوں نے بھی رضاکارانہ طور پر عوام کو مجوزہ سروے میںحصہ لیتے ہوئے اوقافی جائیدادوں کی نشاندہی کرانے کی اپیل کی۔نرسا پور میدک کے قاضی سمیع الدین‘ جناب محمد محمودعلی‘ مولانا مفتی زبیر قاسمی بھونگیر‘جناب محمد بدرالحق ایڈوکیٹ‘ایم اے رشیداندول‘جناب ظہیر خالد کریم نگر‘ جناب محمد عبدالرحیم‘ سید اظہر قادری‘ضلع نلگنڈہ سے محمدلطیف خان‘ عثمان علی‘ جہانگیر‘ بڑے صاحب محمد شفیع‘ سردار ‘ محمد خلیل‘ حافظ عبدالنعیم‘ شیخ عبدالنعیم جگتیال کے بشمول دیگر اضلاع کے مندوبین نے بھی اس کانفرنس میںشرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT