Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ میں مالیاتی بحران! سرکاری ملازمین کو نصف تنخواہ دینے پر غور

تلنگانہ میں مالیاتی بحران! سرکاری ملازمین کو نصف تنخواہ دینے پر غور

حیدرآباد 13 نومبر (سیاست نیوز) چیف منسٹر تلنگانہ کے چندرشیکھر راؤ نے پانچ سو اور ایک ہزار روپئے کے نوٹوں کی منسوخی کے مرکز کے فیصلہ سے تلنگانہ حکومت کو درپیش سنگین مالیاتی بحران کے پیش نظر چیف سکریٹری راجیو شرما اور محکمہ فینانس کے سینئر عہدیداروں کے ساتھ ہنگامی میٹنگ منعقد کی اور ریاست کے مالیہ پر بڑی نوٹوں کی منسوخی کے اثرات کا جائزہ لیا۔ بہت سا لین دین رُک جانے کی وجہ سے آمدنی کمانے والے تمام محکمہ جات کی آمدنی میں کافی کمی واقع ہوئی ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ چیف منسٹر نے چیف سکریٹری اور محکمہ فینانس کے عہدیداروں سے کہاکہ وہ سرکاری ملازمین کو اس ماہ کی صرف نصف تنخواہ لینے کے لئے تیار کریں کیوں کہ حالات کا تقاضہ یہی ہے۔ حکومت کو تنخواہیں اور پنشن ادا کرنے ہر ماہ 2 ہزار پانچ سو کروڑ روپئے اور قرضوں پر سود کی ادائیگی کے لئے ایک ہزار ایک سو کروڑ روپئے کی ضرورت پڑتی ہے۔ حکومت امکان ہے کہ اس ماہ بینکس کو سود کی ادائیگی نہیں کرسکے گی۔ چیف منسٹر امکان ہے کہ بینکس سے سود کی وصولی کے شیڈول پر نظرثانی کریںگے۔ چیف منسٹر نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ تمام فلاحی اسکیموں اور ترقیاتی پروگراموں کے لئے فنڈس روک دیں اور اسٹاف کی تنخواہوں اور پنشن کی ادائیگی کو ترجیح دیں۔

TOPPOPULARRECENT