Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں نئے اضلاع کی تشکیل کی تیاریاں مکمل

تلنگانہ میں نئے اضلاع کی تشکیل کی تیاریاں مکمل

نوٹیفکیشن کے اجراء کا انتظار ، آبادی کے لحاظ سے حیدرآباد سب سے بڑا ضلع ہوگا
حیدرآباد 17 جولائی (سیاست نیوز) ریاستی حکومت کی طرف سے تلنگانہ میں قائم کئے جانے والے نئے اضلاع کی آبادی اور رقبے مختلف ہوں گے جو 24 نئے اضلاع قائم کرنے کی تجویز ہے۔ ان میں سات اضلاع کی آبادی ہر ضلع میں دس لاکھ سے کم ہوگی۔ 6 اضلاع میں ہر ضلع کی آبادی 15 لاکھ سے زیادہ ہوگی۔ اِس طرح دو اضلاع کا رقبہ دو ہزار مربع کلو میٹر سے کم ہوگا۔ دیگر دو اضلاع کا رقبہ زائداز 8 سو مربع کیلو میٹر ہوگا۔ مجوزہ سرسلہ ضلع کا رقبہ ایک ہزار 837 اعشاریہ آٹھ چار مربع کلو میٹر ہوگا جو 9 منڈلوں پر حاوی ہوگا جن کی آبادی سب سے کم 5 لاکھ 48 ہزار 850 ہوگی جبکہ سب سے زیادہ 44 لاکھ 8 ہزار 107 آبادی حیدرآباد ڈسٹرکٹ میں ہوگی جس کا رقبہ 2 ہزار 973 اعشاریہ دو سات مربع کلو میٹر ہوگا۔ مجوزہ اضلاع میں کومارام بھیم کا رقبہ سب سے زیادہ 8 ہزار 161 اعشاریہ چھ آٹھ مربع کلو میٹر ہوگا جو 25 منڈلوں پر مشتمل ہوگا جس کی آبادی بارہ لاکھ 91 ہزار 396 ہوگی۔ سکندرآباد ڈسٹرکٹ کا رقبہ محض ایک ہزار 3 سو 26 اعشاریہ 76 مربع کلو میٹر ہوگا۔ حیدرآباد ڈسٹرکٹ کے بعد دوسری بڑی آبادی 39 لاکھ 73 ہزار 712 سکندرآباد ڈسٹرکٹ میں ہوگا۔ نلگنڈہ ڈسٹرکٹ میں سب سے زیادہ 28 منڈل ہوں گے۔ اس کا رقبہ سات ہزار سات سو 34 اعشاریہ چار ایک کلو میٹر ہوگا۔ آبادی 17 لاکھ 36 ہزار 87 ہوگی۔ یہ چوتھی بڑی آبادی ہوگی۔ تیسری بڑی آبادی والا ضلع ورنگل ہوگا 27 منڈلوں پر مشتمل اس ضلع کی آبادی 22 لاکھ 26 ہزار 850 ہوگی۔ اس کا رقبہ 4 ہزار 941 اعشاریہ سات سات مربع کلو میٹر ہوگا۔ نئے اضلاع کی تشکیل کے ساتھ ریاستی حکومت مزید 74 منڈل قائم کرے گی۔ سات نئے منڈل ضلع نظام آباد میں 5 سرسلہ ڈسٹرکٹ میں کوتہ گوڑم اور جگتیال ڈسٹرکٹس میں ہر جگہ چار نئے منڈل ہوں گے۔ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ کہہ چکے ہیں کہ نئے اضلاع دسہرہ تہوار تک قائم ہوجائیں گے۔ دسہرہ اکٹوبر میں ہے۔ امکان ہے کہ ریاستی حکومت اندرون دس یوم نئے اضلاع کی تشکیل سے متعلق مسودہ نوٹیفکیشن جاری کرے گی۔ اس سے قبل ریاستی حکومت کل جماعتی اجلاس طلب کرنے پر غور کررہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT