Wednesday , December 12 2018

تلنگانہ میں نئے اضلاع کے قیام کی تردید

میڈیا پر بے بنیاد اطلاعات پھیلانے کا الزام

میڈیا پر بے بنیاد اطلاعات پھیلانے کا الزام
حیدرآباد۔/12ستمبر، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے تلنگانہ میں نئے اضلاع کے قیام سے متعلق میڈیا کی اطلاعات کو بے بنیاد قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ مزید 7اضلاع کے قیام سے متعلق میڈیا کی رپورٹس میں کوئی سچائی نہیں ہے لہذا عوام کو اُلجھن کا شکار ہونے کی ضرورت نہیں۔ چیف منسٹر نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے واضح کیا کہ تلنگانہ میں حلقوں کی از سر نو حد بندی کے بعد ہی نئے اضلاع کی تشکیل کا عمل شروع کیا جائے گا۔ حلقوں کی حد بندی کے بغیر یہ کام ممکن نہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت موجودہ 10اضلاع کی جگہ مزید اضلاع کی تشکیل کا منصوبہ رکھتی ہے تاہم 7اضلاع کی تشکیل سے متعلق جو خبریں آرہی ہیں عوام اس پر بھروسہ نہ کریں۔ واضح رہے کہ میڈیا کے بعض گوشوں نے سرکاری ذرائع کے حوالے سے اطلاع دی تھی کہ چیف منسٹر نے عہدیداروں کو مزید سات اضلاع کی تشکیل سے متعلق تجاویز روانہ کرنے کی ہدایت دی ہے۔ پہلے مرحلہ میں جن اضلاع کے قیام کی تجویز کی اطلاع دی گئی ان میں منچریال، جگتیال، سدی پیٹ، وقارآباد، سوریہ پیٹ، کوتہ گوڑم اور ناگرکرنول شامل ہیں۔ نئے اضلاع کی منظوری کیلئے گورنر اور حکومت ہند سے منظوری ضروری ہے۔ دوسرے مرحلہ میں مزید سات اضلاع کی تشکیل کی تیاری سے متعلق میڈیا نے رپورٹ دی۔ واضح رہے کہ انتخابات سے قبل چندر شیکھر راؤ نے اعلان کیا تھا کہ وہ تلنگانہ کے اضلاع کی تعداد 24 کریں گے تاہم اضلاع کی از سر نو حد بندی اور نئے اضلاع کی تشکیل کا مسئلہ مرکزی حکومت کی منظوری کا متقاضی ہے۔ اس کے لئے وقت لگ سکتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT