Friday , April 20 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں نوجوانوں کو ملازمتوں کی عدم فراہمی سے تشویشناک صورتحال

تلنگانہ میں نوجوانوں کو ملازمتوں کی عدم فراہمی سے تشویشناک صورتحال

سرکاری سطح سے اقدامات نظر انداز ، بے روزگاری شرح میں ریکارڈ اضافہ
حیدرآباد۔10نومبر(سیاست نیوز) ملازمتوں کی فراہمی اور پیداوار میں ریاست تلنگانہ کو 9واں مقام حاصل ہوا ہے جبکہ ریاست کی گھریلو شرح پیداوار میں تلنگانہ نے قومی اوسط کو پیچھے چھوڑ دیا ہے اس کے باوجود ریاست میں ملازمتوں کی فراہمی کے سلسلہ میں کوئی بہتر پیشرفت کے آثار نظر نہیں آرہے ہیں۔ ریاست تلنگانہ میں نوجوان نسل کو ملازمت کی عدم فراہمی کے سبب صورتحال تشویشناک ہوتی جا رہی ہے لیکن اس صورتحال سے نمٹنے کے لئے کوئی اقدامات ہوتے نظر نہیں آرہے ہیں۔ تلنگانہ میں جی ڈی پی 10.1 ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ 2015-16 میں یہ 9.5 ریکارڈ کیا گیا تھا اور قومی سطح پر جی ڈی پی اوسط شرح 7.1ریکارڈ کی جا رہی ہے۔ ماہرین کے مطابق تشویشناک بات یہ ہے کہ ریاست میں 15تا29 سال کے نوجوانوں کو ملازمت کے مواقعوں کی عدم دستیابی کے سبب حالات ابتر ہونے کا خدشہ ہے۔ اس عمر کے نوجوانوں میں بے روزگاری کی شرح 7.7فیصد ریکارڈ کی جا رہی ہے اور اس میں 3.8 فیصد ایسے ہیں جو کہ دیہی علاقوں سے تعلق رکھتے ہیں جبکہ 17.2 کا تعلق شہری آبادیوں سے ہے۔ تلنگانہ کے 45.8 جملہ برسرروزگار عوام میں 35.4 فیصد خود روزگار سے جڑے ہوئے ہیں اور اپنے کاروبار کر رہے ہیں اور 16.1فیصد مزدوری کر رہے ہیں جبکہ 2.7نوجوان ایسے ہیں جو کنٹراکٹ اساس پر خدمات انجام دے رہے ہیں۔نیشنل اسکل ڈیولپمنٹ کارپوریشن کی جانب سے جاری کردہ رپورٹ کے مطابق مہاراشٹر ا 19.72ملازمتوں کے ساتھ سر فہرست ہے جبکہ دہلی میں 16.99 ملازمتیں موجود ہیں جس کے سبب دہلی دوسرے نمبر پر ہے لیکن تلنگانہ پہلی 5سر فہرست ریاستوں میں شامل نہیں ہو پائی ۔ ملک میں موجود جملہ ملازمتوں میں تلنگانہ میں صرف 3.47 فیصد ملازمتیں موجود ہیں اور سافٹ وئیر ڈیولپرس اور سیلس کے شعبہ میں طلب تیزی سے بڑھتی جا رہی ہے نیشنل اسکل ڈیولپمنٹ کارپوریشن کی جانب سے جاری کردہ اس رپورٹ کی تیاری کے لئے کئے گئے سروے کے دوران مختلف امور کا خیال رکھتے ہوئے ہر زمرہ میں سروے کیا گیا۔ تمل ناڈو‘ گجرات ‘ مدھیہ پردیش ‘ اترپردیش کے علاوہ دیگر ریاستو ں میں ملازمتوں کی فراہمی کی صورتحال تلنگانہ سے بہتر ریکارڈ کی جا رہی ہے اور ان ریاستوں کے پاس ملک بھر کی موجودہ ملازمت کی فراہمی کے موقف میں کا فی بہتر حصہ ریکارڈ کیا جا رہا ہے جبکہ تلنگانہ میں گھریلو شرح پیداوار و ترقیات کے کافی بہتر ہونے کے باوجود ملازمتوں کے حصہ میں کوئی نمایاں اضافہ ریکارڈ نہیں کیا گیا۔

TOPPOPULARRECENT