Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں وبائی امراض کا خطرہ

تلنگانہ میں وبائی امراض کا خطرہ

حیدرآباد 29 اکتوبر ( سیاست نیوز ) تلنگانہ کے اسپتالوں میں بڑی تعداد میں ڈینگو ، چکن گَنیا،ملیریا کے کئی کیس ریکارڈ کیے جارہے ہیں۔ تاہم ان امراض سے اب تک کسی کی بھی موت واقع نہیں ہوئی ہے۔ مریض سرکاری اسپتالوں کے بجائے نجی اسپتالوں سے رجوع ہورہے ہیں۔حیدرآباد سمیت تلنگانہ کے تمام اضلاع میں ڈینگو، ملیریاء اورچکن گنیاکی وباء پھیل سکتی

حیدرآباد 29 اکتوبر ( سیاست نیوز ) تلنگانہ کے اسپتالوں میں بڑی تعداد میں ڈینگو ، چکن گَنیا،ملیریا کے کئی کیس ریکارڈ کیے جارہے ہیں۔ تاہم ان امراض سے اب تک کسی کی بھی موت واقع نہیں ہوئی ہے۔ مریض سرکاری اسپتالوں کے بجائے نجی اسپتالوں سے رجوع ہورہے ہیں۔حیدرآباد سمیت تلنگانہ کے تمام اضلاع میں ڈینگو، ملیریاء اورچکن گنیاکی وباء پھیل سکتی ہے۔ تلنگانہ میں ڈینگو ،کے 3 سو 94 معاملات درج کیے گئے ہیں۔ محکمہ صحت کے مطابق دیہی علاقوں میں وبائی امراض کے کیس ریکارڈ کیے جارہے ہیں ۔ کھمم اور عادل آباد اضلاع میں وبائی امراض کے سب سے زیادہ معاملات ریکارڈ کیے گئے ہیں۔ محکمہ صحت کے مطابق عادل آباد میں ڈینگو ، کے 210 معاملات ریکارڈ کیے گئے ہیں۔ اسی طرح ضلع کھمم میں وبائی امراض کے 99 معاملات درج کیے گئے ہیں۔ جبکہ ضلع ورنگل میں ڈینگو کے 55 معاملے درج کیے گئے ہیں۔عوام کو ملیریا بخارکاخطرہ لاحق ہوگیاہے۔ تلنگانہ میں اب تک ملیریا کے 2ہزار9 سو81 معاملات سامنے آئے ہیں۔ محکمہ صحت کا کہناہے کہ ضلع کھمم میں ملیریاکے سب سے زیادہ 1 ہزار 4 سو 89 کیس سامنے آئے ہیں۔ ادھر عادل آباد میں 9سو4،ورنگل میں 1سو88 ملیریاء کے کیسوں کی نشاندہی کی گئی ہے۔ اسی طرح تلنگانہ میں اب تک چکن گنیا کے جملہ 54 معاملات درج سامنے آئے ہیں۔ حکام کے مطابق محبوب نگر میں27، اور عادل آباد میں 18 چکن گنیا کیسوں کی نشاندہی کی گئی ہے۔ حکام کا کہناہے کہ حیدرآباد اور ضلع رنگاریڈی میں وبائی امراض کے کیسس درج کیے جارہے ہیں۔

عثمانیہ، گاندھی ، فیوراسپتال بھی وبائی امراض کے معاملات میں اضافہ ریکارڈ کیا جارہا ہے۔تلنگانہ کے نائب وزیراعلیٰ وزیرصحت ڈاکٹرراجیاکا کہناہے کہ وبائی امراض کے معاملات سامنے آرہے ہیں تاہم اب تک وبائی امراض سے متاثرہ کسی بھی شخص کی موت نہیں ہوئی ہے۔محکمہ صحت کا کہناہے کہ تلنگانہ حکومت وبائی امراض پر قابوپانے کے لیے مختلف اقدامات کررہی ہے ۔تمام اضلاع میں ڈسٹرکٹ اسپتالوں کو الاٹ کردیاگیا ہے۔اور دیہی وشہری علاقوں میں ہیلت کیمپ لگائے جارہے ہیں ۔ تلنگانہ حکومت ڈینگو،چکن گَنیا،ملیریا کے متعلق عوام میں شعوربیدارکرنے اوران امراض سے بچاؤ کے حتیاطی تدابیر سے عوام کو واقف کرایاجارہاہے۔ڈینگواورچکن گنیا سے نمٹنے کے لیے تلنگانہ حکومت نے سرکاری دواخانوں کو variation Platelets مشینیں فراہم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت کے اس منصوبے پر 7کروڑ روپئے خرچ کیے جارہے ہیں۔ تلنگانہ کے نائب وزیراعلیٰ و وزیر صحت ڈاکٹرراجیاکاکہناہے کہ 2 سو بستروں والے اسپتالوں کے بلڈ بینکس میں پلیٹ لیٹس میشنیں فراہم کی جائیں گی۔

TOPPOPULARRECENT