Monday , May 28 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں ٹی آر ایس کی آمرانہ حکمرانی : ایس جئے پال ریڈی

تلنگانہ میں ٹی آر ایس کی آمرانہ حکمرانی : ایس جئے پال ریڈی

مخالف ٹی آر ایس اتحاد پر جناگھرشنا جلسہ عام ، سابق مرکزی وزیر کا بیان
حیدرآباد ۔ 18 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : سابق مرکزی وزیر ایس جئے پال ریڈی نے تلنگانہ میں آمرانہ حکمرانی چلنے کا الزام عائد کرتے ہوئے مخالفین ٹی آر ایس کو متحد ہونے اور 20 دسمبر کو جڑچرلہ میں منعقد ہونے والے ’جنا گھرشنا ‘ جلسہ عام میں شرکت کرتے ہوئے اس کو کامیاب بنانے کی اپیل کی ۔ ایک پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے جئے پال ریڈی نے کہا کہ جن اغراض و مقاصد کی تکمیل کے لیے علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دیا گیا تھا ۔ اس کو پورا کرنے میں چیف منسٹر کے سی آر پوری طرح ناکام ہوگئے ہیں ۔ سماج کا کوئی بھی طبقہ ٹی آر ایس حکومت کی کارکردگی سے مطمئن نہیں ہے ۔ ریاست میں لا اینڈ آرڈر پوری طرح ناکام ہوگیا ہے ۔ انحراف کی سیاست کو فروغ دیتے ہوئے چیف منسٹر تلنگانہ خود بدعنوانیوں کی حوصلہ افزائی کررہے ہیں ۔ ریاست کو قرض کے دلدل میں جھونکتے ہوئے ریاست کے ہر فرد کو یہاں تک کے پیدا ہونے والے ہر بچے کو مقروض بنایا جارہا ہے ۔ سماج کے تمام طبقات کے نوجوانوں نے علحدہ تلنگانہ ریاست کی تحریک میں اپنی زندگیاں قربان کی علحدہ تلنگانہ ریاست میں ملازمتیں ملنے انصاف ہونے کی توقع کی گئی تھی ۔ بیروزگار نوجوانوں کو روزگار تو نہیں ملا مگر چیف منسٹر کے ارکان خاندان کو روزگار مل گیا ہے ۔ ترقی ٹھپ ہو کر رہ گئی ہے ۔ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر اپنے آپ کو شاہی حکمراں تصور کرتے ہوئے من مانی عوام دشمن پالیسیوں پر عمل آوری کررہے ہیں ۔ حکومت کی خامیوں اور غلطیوں کی نشاندہی کرنے والوں کے خلاف سیاسی انتقام لیا جارہا ہے ۔ سیاسی جماعتوں ، رضا کارانہ تنظیموں کو عوامی مسائل پر احتجاج کرنے کی بھی اجازت نہیں دی جارہی ہے ۔ اب وقت آگیا ہے کہ مخالفین ٹی آر ایس علحدہ علحدہ طور پر حکومت کے خلاف جدوجہد کرنے کے بجائے متحد ہو کر بہت بڑی طاقت بن جائے اور ٹی آر ایس کو اقتدار سے بیدخل کرنے کے لیے نظریاتی اختلافات کو فراموش کرتے ہوئے متحد ہونے کی پہل کریں کیوںکہ ٹی آر ایس نے 2014 کے انتخابی منشور میں عوام سے کئے گئے وعدوں میں ایک وعدے کو بھی پورا نہیں کیا ۔ 20 دسمبر کو جڑچرلہ میں ’ جناگھرشنا ‘ جلسہ عام کا انعقاد کیا جارہا ہے ۔ اس جلسہ میں مخالفین تلنگانہ ایک پلیٹ فارم پر جمع ہوتے ہوئے اتحاد کا ثبوت پیش کریں اور بھاری تعداد میں شرکت کرتے ہوئے جلسہ عام کو کامیاب بنانے کی عوام سے خواہش کی ۔ ٹی آر ایس کے دور حکومت میں 4 ہزار کسان خود کشی کرچکے ہیں ۔ طلبہ کی فیس بازادائیگی کے بقایا جات جاری نہیں کئے گئے ۔ پیشہ وارانہ تجارت سے وابستہ چھوٹے بڑے تاجرین پریشان ہیں ۔ چیف منسٹر کے سی آر صرف وعدے اور اعلانات تک محدود ہیں ۔ روزگار کے انتظار میں بیروزگار نوجوان خود کشی کے لیے مجبور ہورہے ہیں ۔ مختلف طبقات میں پھوٹ ڈال کر کے سی آر راج کررہے ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT