Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں کے جی تا پی جی مفت تعلیم

تلنگانہ میں کے جی تا پی جی مفت تعلیم

پرائیویٹ اسکولوں میں بیجا فیس کی وصولی پر ایس آئی او کی حکومت پر نکتہ چینی
نظام آباد 4 اگست ( یو این آئی) برادر معین الدین سکریٹری شعبہ رابطہ عامہ نے کہا ہے کہ ایس آئی او تلنگانہ شہر نظام آباد (تلنگانہ) کی جانب سے 8روزہ تعلیمی ترقی مہم شروع کی گئی ہے جس میں ایس آئی او شہر نظام آباد کے تمام سرکاری اسکولوں وکالجوں کا سروے کیا جارہا ہے اور موجودہ صورتحال سے حکومت کو واقف کروایاجائے گا۔انہوں نے کہا کہ یہ مہم حکومت کی تعلیمی سرگرمیوں میں ہورہی ناکامی و لاپرواہی کاپردہ فاش کرے گی ۔مہم کے سلسلہ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے برادر عامر خان (صدر ایس آئی او نظام آباد) نے حکومت تلنگانہ و کلکٹر ،ایم پی و ایم ایل اے سے تعلیمی مسائل کو فوراً حل کرانے پر زور دیا اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ سرکاری اسکولس کی صورتحال پر سنجیدگی کے ساتھ غور کرے اور وہاں کے نظم و نسق وتعلیمی سرگرمیوں پر گہری نظر رکھی جائے تاکہ معیاری تعلیم کے حصول میں آسانی پیدا ہوسکے ۔ تلنگانہ میں 7000اسکول ہیں جہاں60طلباء سے زائد تعداد پر صرف ایک معلم اپنی خدمات انجام دیتا ہے جوآر ٹی ای قانون کے خلاف ہیں۔ہرسرکاری اسکولس میں اسکول مینجمنٹ کمیٹی تشکیل دی جائے ۔ جس کے تعلق سے ہمیشہ کو تاہی برتی جارہی ہے ۔پرائیویٹ اسکولوں کی جانب سے بے تحاشہ داخلہ فیس وڈونیشنس کے نام پر فیس وصول کی جارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ایس آئی او حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ جلد اسکول میں ہورہی فیس کی بے تحاشہ وصولی کے خلاف سرکاری احکامات جاری کرے ۔ اسی کے ساتھGO No. 91جو پرائیویٹ مدارس کے متعلق ہے اس پر فوراً عمل کیا جائے ۔ RTEکے تحت چھ تا14سال عمر کے بچوں کیلئے مفت تعلیم کاحصول لازم قرار دیاگیاہے ۔ ایس آئی او حکومت سے مطالبہ کرتی ہے کہ وہ اس شرح کو 0تا18سال عمر کردیں تاکہ ہر بچہ اپنے جائز مقصد سے محروم نہ ہوسکے ۔

TOPPOPULARRECENT