Sunday , November 18 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ میں 100 پٹرول پمپس چلانے محکمہ محابس کا منصوبہ

تلنگانہ میں 100 پٹرول پمپس چلانے محکمہ محابس کا منصوبہ

مرد اور خاتون قیدیوں کو روزگار کی فراہمی موجودہ پٹرول پمپس سے 10 کروڑ کی آمدنی
حیدرآباد ۔ 11؍ فبروری ( پی ٹی آئی) تلنگانہ کے محکمہ محابس نے ریاست بھر میں اپنی طرف سے چلائے جانے والے پٹرول پمپس کی تعداد کو 2018 تک 100 تک پہونچانے کا منصوبہ بنایا ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ سابق قیدیوں کو روزگار فراہم کرتے ہوئے انہیں خود مکتفی بنایا جاسکے ۔ تلنگانہ پریزنس ڈپارٹمنٹ کے مختلف اضلاع میں فی الحال 13 پٹرول پمپس ہیں جنہیں اس کے 200 قیدیوں کے علاوہ چند سابق ملازمین چلا رہے ہیں ۔ تیل کی سرکاری کمپنیاں مزید پٹرول پمپس کے قیام کے خانگی اراضیات پٹہ پر حاصل کرنے کے عمل میں مصروف ہیں جنہیں اس مقصد کے لئے محکمہ جیل کے حوالہ کیا جائیگا ۔ ڈائرکٹر جنرل (محابس و اصلاحی خدمات) وی کے سنگھ نے پی ٹی آئی سے کہا کہ آئندہ دو ماہ کے دوران ہم مزید سات پٹرول پمپس کھولیں گے اور رواں سال کے اختتام تک 100 پٹرول پمپس چلانے کا نشانہ مقرر کیا گیا ہے ۔ تمام خواتین اسٹاف پر مشتمل ملک کا پہلا پٹرول پمپ گذشتہ سال جون کے دوران چنچل گوڑہ سنٹرل جیل میں کھولا گیا جس کو مختلف جیلوں میں سزائے قید مکمل کرنے کے بعد رہا ہونے والی سابق قیدی خواتین چلا رہی ہیں ۔ وی کے سنگھ نے مزید کہا کہ صرف خواتین اسٹاف پر مشتمل مزید چند پٹرول پمپس کھولنے کا منصوبہ بھی ہے جو تاہم محلہ جات کی نوعیت پر منحصر ہوگا کیونکہ ہم اس ضمن میں سیکوریٹی کا پہلو بھی ملحوظ رکھتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے 80 نئے پٹرول پمپس میں خواتین 25 تا 30 فیصد روزگار فراہم کرنے کا منصوبہ ہے ۔ محکمہ محابس کے ایک اور سینئر عہدیدار نے کہا کہ ’’ پٹرول پمپس کے ذریعہ مالیاتی سال 2016-17 میں ہمیں 10 کروڑ روپئے کا منافع ہوا ہے ۔ مالیاتی سال 2017-18 میں ہم 15 کروڑ روپئے منافع کی توقع کر رہے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ محکمہ محابس کے لئے پٹرول پمپس (آمدنی کے حصول کا) بہت بڑا ذریعہ ثابت ہو رہے ہیں ۔ چنچل گوڑہ سنٹرل جیل میں پانچ سال قبل اپنی نوعیت کا یہ پہلا پٹرول پمپ قائم کیا گیا تھا جہاں سزائے قید مکمل کرنے کے بعد رہا شدہ سابق قیدیوں کو ماہانہ 12000 روپئے اور موجودہ قیدیوں کو ماہانہ 3000 روپئے تنخواہ دی جاتی ہے ۔ اس عہدیدار نے کہا کہ صرف خواتین اسٹاف پر مشتمل پٹرول اسٹیشن میں ان 25 خواتین کو ملازمت دی گئی ہے جو قید کی تکمیل کے بعد رہا ہوئی ہیں ۔ انہیں بھی ماہانہ 12000 روپئے تنخواہ دی جاتی ہے ۔ وی کے سنگھ نے کہا کہ محکمہ محابس نے دیہاتوں میں 1000 دوکانات قائم کرنے کا منصوبہ بنایا ہے جہاں قیدیوں کی طرف سے تیار شدہ اشیاء فروخت کی جائیںگی ۔

TOPPOPULARRECENT