Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ میں 31 اضلاع کی تشکیل ، ریاست میں جشن کا ماحول

تلنگانہ میں 31 اضلاع کی تشکیل ، ریاست میں جشن کا ماحول

عوام کی خوشحالی اور فلاح و بہبود کیلئے آخری سانس تک جدوجہد کرنے کا عہد ، سدی پیٹ میں جلسہ عام ، چیف منسٹر کا خطاب

O    سدی پیٹ کیلئے 100کروڑ روپئے، میڈیکل کالج اور پولیس کمشنریٹ کے قیام کا وعدہ
O    جب مایوسی سے آنکھیں نم ہوئی تھیں اور آج خوشی سے
اشکبار،این ٹی آر سے نمائندگی کا تذکرہ

محمد نعیم وجاہت
حیدرآباد ۔ /11 اکٹوبر ۔ چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر نے ضلع سدی پیٹ کی ترقی کیلئے 100کروڑ روپئے جاری کرنے کے ساتھ ساتھ گورنمنٹ میڈیکل کالج قائم کرنے کا اعلان کیا ۔ انہوں نے کہا کہ 33 سال قبل آنجہانی این ٹی آر کو سدی پیٹ ضلع بنانے کی جس مقام پر یادداشت پیش کی تھی اسی جگہ پر جلسہ عام کے ذریعہ سدی پیٹ کو ضلع بنانے کا اعلان کرتے ہوئے وہ فخر محسوس کررہے ہیں ۔ لوک سبھا کیلئے مقابلہ کرتے وقت سدی پیٹ چھوڑتے ہوئے ان کی آنکھیں نم ہوئی تھیں تاہم ہریش راؤ نے مثالی کارکردگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے میری کمی محسوس ہونے نہیں دی ۔ ان کا آشیرواد ہمیشہ ہریش راؤ کے ساتھ رہے گا ۔ تلنگانہ میں آج سے 31 اضلاع کارکرد ہوگئے ہیں ۔ عوام دوگنی خوشی محسوس کررہے ہیں ۔ چیف منسٹر نے کلکٹریٹ کا افتتاح کرنے کے بعد امبیڈکر چوراہا پر منعقدہ ایک جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا ۔اس موقع پر ریاستی وزیر مسٹر ہریش راؤ ، رکن قانون ساز کونسل مسٹر محمد فاروق حسین ارکان پارلیمنٹ مسٹر کے پربھاکر ریڈی ، کیپٹن لکشمی کانت کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔ چیف منسٹر نے سدی پیٹ کے بشمول تلنگانہ کے عوام کو دسہرہ اور نئے اضلاع کے تشکیل کی مبارکباد دی  اور پرانی یادوں کو تازہ کرتے ہوئے کہا کہ 30 سال قبل سابق چیف منسٹر آنجہانی این ٹی آر حیدرآباد سے کریم نگر جاتے وقت سدی پیٹ پر توقف کئے تھے اور انہوں نے مجسمہ امبیڈکر پر پھول نچھاور کئے تھے ۔ اُسی وقت انہوں نے این ٹی آر سے تحریری نمائندگی کی تھی کہ وہ سدی پیٹ کو ضلع بنائے ۔ تب تو کوئی کارروائی نہیں ہوئی مگر انہیں آج اس بات کی خوشی ہے کہ جس مقام پر وہ این ٹی آر سے نمائندگی کی تھی اُسی مقام پر جلسہ عام کا اہتمام کرتے ہوئے سدی پیٹ کو ضلع بنانے کا اعلان کررہے ہیں ۔ وہ سدی پیٹ عوام کے شکر گزار ہیں جنہوں نے انہیں  (کے سی آر) کو کبھی ہارنے نہیں دیا بلکہ ہر قدم پر ان کا ساتھ دیا اور حوصلہ افزائی کی علحدہ تلنگانہ ریاست کی تحریک کو پروان چڑھانے اور کامیاب بنانے میں مکمل تعاون کیا ہے ۔ جس کی بدولت علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل پائی ہے ۔ تلنگانہ کو سنہرے تلنگانہ میں تبدیل کرنے کیلئے وہ نظم و نسق میں بڑے پیمانے پر اصلاحات لاتے ہوئے تلنگانہ کے اضلاع کی تعداد کو 10 سے بڑھاکر 31 تک کرچکے ہیں ۔ کے سی آر نے کہا کہ وہ کہیں بھی رہے ان کا دل سدی پیٹ کیلئے تڑپتا ہے ۔ سدی پیٹ اسمبلی حلقہ اور شہر کی ایسی کوئی گلی یا گاؤں نہیں ہے جس کا انہوں نے دورہ نہیں کیا ہے ۔ سدی پیٹ کے عوام نے ان کی ہر طرح سے مدد کی ہے ۔ مقامی رکن اسمبلی ہریش راؤ نے ان سے دسہرہ کے تحفے کے طور پر سدی پیٹ کیلئے گورنمنٹ میڈیکل کالج مانگا ہے جس کو وہ فوری اثر کے ساتھ قبول کرتے ہیں کہا کہ  آئندہ تعلیمی سال سے سدی پیٹ میں گورنمنٹ میڈیکل کالج قائم کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ سدی پیٹ میں ایک یونیورسٹی کی بھی ضرورت ہے ۔ ساتھ ہی سدی پیٹ کی مثالی ترقی کیلئے بھی وہ 100 کروڑ روپئے کا اعلان کررہے ہیں ۔ جس سے کلکٹریٹ ، ایس پی آفس ، عدالت کی عالیشان عمارتوں کے علاوہ دوسری ترقیاتی کاموں کو یقینی بنائیں گے ۔ سدی پیٹ کے عوام کیلئے یہ بھی خوشخبری ہے کہ پولیس کمشنریٹ بھی قائم کیا جارہا ہے ۔ سرکاری نظم و نسق کو عوام کی دہلیز تک پہنچانے کیلئے 31 اضلاع کے ساتھ ساتھ 68 ریونیو ڈیویژنس اور 584 منڈلس تشکیل دیئے جارہے ہیں ۔ آج ساری ریاست تلنگانہ میں جشن منایا جارہا ہے ۔ انہوں نے علحدہ تلنگانہ ریاست کیلئے کئی قربانیاں دی ہیں جس مقام پر وہ سدی پیٹ میں غیر معینہ مدت کی بھوک ہڑتال کا آغاز کرچکے تھے ۔ اُسی مقام کو یادگار میں تبدیل کرنے کا منصوبہ رکھتے ہیں

TOPPOPULARRECENT