Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ وقف بورڈ سے ائمہ و مؤذنین کے اعزازیہ کی رقم کی اجرائی

تلنگانہ وقف بورڈ سے ائمہ و مؤذنین کے اعزازیہ کی رقم کی اجرائی

ایک سال کے بقایا جات کی بھی آن لائن ادائیگی، چیرمین بورڈ الحاج محمد سلیم کا میڈیا سے خطاب
حیدرآباد۔/22اپریل، ( سیاست نیوز) صدرنشین تلنگانہ وقف بورڈ محمد سلیم نے آج ائمہ اور مؤذنین کے ماہانہ اعزازیہ کی رقم جاری کی۔ انہوں نے حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے 50 ائمہ اور مؤذنین کو ماہانہ ایک ہزار روپئے کے حساب سے ایک سال کے بقایا جات کا چیک حوالے کیا۔ اس اسکیم کے تحت 7052 ائمہ اور مؤذنین کو اہل قرار دیا گیا تھا جنہیں رقومات آن لائن جاری کی جارہی ہیں۔ حیدرآباد سے تعلق رکھنے والے تقریباً 500 درخواست گذاروں کو رقومات آن لائن جاری کی گئیں۔ صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم نے میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ اپریل 2016 سے مارچ 2017 تک کے بقایا جات جاری کئے جاچکے ہیں۔ حکومت نے اس اسکیم کیلئے 24 کروڑ روپئے جاری کئے تھے جن میں سے دو مرحلوں میں 16کروڑ خرچ کئے جاچکے ہیں مزید 8 کروڑ روپئے وقف بورڈ میں دستیاب ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت نے ائمہ اور مؤذنین کے اعزازیہ کی رقم کو 1500روپئے کرنے کا اعلان کیا ہے جس پر عمل آوری کا اپریل کی ادائیگی سے آغاز ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ اس اسکیم کے تحت 9000 درخواستیں داخل کی گئیں اور 8000 درخواستوں کو منظوری دی گئی۔ 7052 درخواست گذاروں کو آن لائن رقم جاری کردی گئی ہے۔ باقی درخواستوں کی جانچ کا کام جاری ہے انہیں بھی بہت جلد رقومات جاری کردی جائیں گی۔ محمد سلیم نے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے ائمہ اور موذنین کی معاشی پسماندگی دور کرنے کیلئے ماہانہ اعزازیہ کی اسکیم شروع کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ حکومت کی جانب سے تنخواہ نہیں بلکہ ھدیہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ باقی درخواست گذاروں کو رمضان المبارک کے آغاز تک رقم جاری کردی جائے گی۔ محمد سلیم نے اس اسکیم پر مؤثر عمل آوری اور درخواستوں کی عاجلانہ یکسوئی کیلئے متعلقہ سیکشن میں ملازمین کی تعداد میں اضافہ سے اتفاق کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شب معراج کے پیش نظر تمام مساجد اور درگاہوں کی کمیٹیوں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ روشنی اور صفائی کے انتظامات کو یقینی بنائیں۔ اس سلسلہ میں گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن سے بھی نمائندگی کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ بہتر انتظامات کو یقینی بنانا کمیٹیوں کی ذمہ داری ہے۔ اگر کمیٹیاں اس کام میں ناکام ہوں گی تو وقف بورڈ کمیٹیوں کے انتظامات اپنی تحویل میں لے سکتا ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے بتایا کہ انیس الغرباء کامپلکس کے تعمیری کاموں کا سنگ بنیاد چیف منسٹر کے ہاتھوں اندرون ایک ماہ رکھا جائے گا۔ 20 کروڑ روپئے کی لاگت سے کامپلکس کی تعمیر کا منصوبہ ہے جس کی آمدنی انیس الغرباء پر خرچ کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ انیس الغرباء کی جن ملگیات کو مجلس بلدیہ کی جانب سے منہدم کیا گیا اس کے معاوضہ کیلئے چیف ایکزیکیٹو آفیسر کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ جی ایچ ایم سی کو مکتوب روانہ کریں۔ انہوں نے بتایا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اقلیتوں کی بھلائی کی اسکیمات کے سلسلہ میں سنجیدہ ہیں اور انہوں نے اوقافی جائیدادوں کے تحفظ کیلئے وقف بورڈ کو ممکنہ تعاون کا یقین دلایا۔

TOPPOPULARRECENT