Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ وقف بورڈ کا 23 مئی کو اجلاس

تلنگانہ وقف بورڈ کا 23 مئی کو اجلاس

زیر التواء فائیلوں کی یکسوئی متوقع ، ایجنڈہ کی قطعیت باقی
حیدرآباد۔ 15 مئی (سیاست نیوز) تلنگانہ وقف بورڈ کا اجلاس 23 مئی کو طلب کیا گیا ہے جس میں امکان ہے کہ گزشتہ دو ماہ سے زیر التوا فائلوں کی یکسوئی کی جائے گی۔ بتایا جاتا ہے کہ تمام ارکان کو اجلاس کے انعقاد کی اطلاع دے دی گئی ہے۔ تاہم ایجنڈے کو قطعیت دینے کا کام ابھی باقی ہے۔ امکان ہے کہ ایجنڈہ 100 سے زائد امور پر مشتمل ہوسکتا ہے کیوں کہ حالیہ عرصے میں مختلف کمیٹیوں کی تشکیل اور متولیوں کی میعاد میں توسیع جیسے امور پر احکامات کی اجرائی باقی ہے۔ چیف ایگزیکٹیو آفیسر ایم اے منان فاروقی ماتحت عہدیداروں کے عدم تعاون کے رویہ سے خوش نہیں ہیں، انہوں نے تمام اہم فائلوں پر کوئی بھی فیصلہ کرنے کے بجائے انہیں بورڈ سے رجوع کردیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ بورڈ میٹنگ میں تقریباً 45 قراردادیں منظور کی گئی تھیں تاہم ان تمام قراردادوں کے حق میں احکامات کی اجرائی مکمل نہیں ہوئی ہے۔ بورڈ کے بعض فیصلوں پر نظرثانی کے لیے چیف ایگزیکٹیو آفیسر نے بورڈ سے درخواست کی ہے۔ اسی دوران صدرنشین محمد سلیم نے آج اعلی عہدیداروں کا اجلاس طلب کرتے ہوئے کرایہ جات کی وصولی کی مہم میں شدت پیدا کرنے کی ہدایت دی۔ انہوں نے کہا کہ شہر اور اضلاع میں اوقافی جائیدادوں کے کرایہ جات کی وصولی کا سلسلہ انتہائی سست ہے۔ کرائے میں اضافہ تو کجا موجودہ کرائے بھی مقررہ وقت پر ادا نہیں کیئے جارہے ہیں۔ اگر سنجیدگی کے ساتھ مہم چلائی جائے تو وقف بورڈ کو کروڑہا روپئے حاصل ہوسکتے ہیں۔ شہر میں نبی خانہ مولوی اکبر اور دوسرے اوقافی ادارے ایسے ہیں جہاں ملگیوں کی تعداد سینکڑوں میں ہے لیکن گزشتہ ایک سال سے نہ ہی کرایہ جات میں اضافہ کیا گیا اور نہ ہی موجودہ کرائے وصول ہورہے ہیں۔ صدرنشین وقف بورڈ نے عہدیداروں سے کہا کہ وہ شہر اور اضلاع میں اہم اوقافی اداروں کی نشاندہی کرتے ہوئے باقاعدہ مہم کا آغاز کریں۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کے آغاز سے قبل وہ مثبت نتائج دیکھنا چاہتے ہیں۔ صدرنشین نے اس مسئلہ پر منگل کے دن ایک اہم اجلاس طلب کیا ہے۔ صدرنشین وقف بورڈ نے اوقافی اراضیات پر ہورڈنگس کی تنصیب کی پالیسی تیار کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس کے تحت ہورڈنگس کے لیے نہ صرف نیا معاہدہ کیا جائے گا بلکہ چارجس میں اضافہ ہوگا۔ وقف بورڈ کی اراضیات پر ہورڈنگس میں مخرب اخلاق تصاویر اور مواد کو روکنے کے لیے اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ صدرنشین وقف بورڈ نے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ بورڈ کی آمدنی کے اعتبار سے بیوائوں کو ماہانہ وظائف کی اسکیم تیار کریں تاکہ مطلقہ خواتین کی طرح مسلم بیوہ خواتین کو بھی وقف بورڈ سے امداد دی جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT