Friday , January 19 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ و آندھرا مذاکرات سے باہمی مسائل کو حل کرسکتے ہیں

تلنگانہ و آندھرا مذاکرات سے باہمی مسائل کو حل کرسکتے ہیں

حیدرآباد 12 فبروری ( پی ٹی آئی ) چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو نے آج کہا کہ تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے مابین تمام متنازعہ مسائل جیسے پانی ‘ برقی وغیرہ کو بات چیت کے ذریعہ حل کیا جاسکتا ہے ۔ چیف منسٹر نے ورنگل میں آج شام پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کاہ کہ وہ ایک بار پھر کہہ رہے ہیں کہ جو کچھ بھی مسائل تقسیم ریاست کی و

حیدرآباد 12 فبروری ( پی ٹی آئی ) چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو نے آج کہا کہ تلنگانہ اور آندھرا پردیش کے مابین تمام متنازعہ مسائل جیسے پانی ‘ برقی وغیرہ کو بات چیت کے ذریعہ حل کیا جاسکتا ہے ۔ چیف منسٹر نے ورنگل میں آج شام پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کاہ کہ وہ ایک بار پھر کہہ رہے ہیں کہ جو کچھ بھی مسائل تقسیم ریاست کی وجہ سے ہوئے ہیں انہیں تنظیم جدید آندھرا پردیش بل کے ذریعہہ حل کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اس بل میں جہاں آندھرا پردیش کیلئے کچھ مراعات ہیں وہیں برقی ‘ ملازمین ‘ پنشن ‘ مالیہ اور اثاثہ جات کی تقسیم کے تعلق سے واضح اصول موجود ہیں تاہم اس میں کچھ مسائل بھی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر دونوں ریاستیں مل بیٹھ کر مسائل حل کرلیتی ہیں تو یہ خوشی کی بات ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ریاستوں ہی کو مسائل حل کرنے چاہئیں ورنہ مرکزی حکومت یا پھر دوسروں کو شامل کرنا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ایسے انداز میں مسائل کو حل کرسکتے ہیں جو دونوں ریاستوں کیلئے قابل قبول ہو ۔ اگر ہم بہبودی اور ترقیاتی کاموں پر توجہ دیں تو دونوں ریاستوں کی حالت بہتر ہوگی ۔ انہوں نے تاہم کہا کہ تمام مسائل کو باہمی رضامندی سے حل کرنے ان کی کوششوں کا حوصلہ افزا رد عمل حاصل نہیں ہوا ہے ۔ چندرا بابو نائیڈو کا تلنگانہ کی تشکیل کے بعد یہ اولین دورہ تھا ۔ انہوں نے برسر اقتدار تلنگانہ راشٹرا سمیتی کے قائدین پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کچھ افراد ان پر وہ الزام عائد کرتے ہیں جو انہوں نے نہیں کئے ہیں۔ وہ اس تنقید کا جواب دے رہے تھے کہ وہ اپنی ریاست ( آندھرا پردیش ) پر بیرون ملک ( حیدرآباد ) میں بیٹھ کر حکمرانی کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب کبھی وہ انٹرنیشنل ائرپورٹ ‘ کنونشن سنٹر اور آوٹر رنگ روڈ کا دورہ کرتے ہیں انہیں خوشی ہوتی ہے ۔ یہ اثاثے انہوں نے قائم کئے ہیں۔ یہ سب کام عوام کیلئے کئے گئے ہیں۔ انہیں فخر ہوتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے کچھ کانگریس قائدین نے ان سے زراعت کے تعلق سے کچھ غلط ریمارکس منسوب کردئے تھے ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ وہ آندھرا پردیش تنظیم جدید بل کے پابند رہیں گے مسٹر نائیڈو نے کہا کہ ریگولیٹری کمیشن نے کرشناپٹنم پاور پراجیکٹ کیلئے کوئی منظوری نہیں دی ہے ۔ انہوں نے ٹی آر ایس پر الزام عائد کیا کہ وہ کرشناپٹنم میں تیار ہونے والی برقی میں تقسیم نہیں کر رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انہیں تلنگانہ اور آندھرا دونوں جگہ سے محبت ملی ہے ۔ وہ کبھی بھی اس علاقہ کو نہیں چھوڑیں گے حالانکہ کچھ لوگ انہیں آندھرا پردیش منتقل ہوجانے کا مشورہ دے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تلگودیشم نے تلنگانہ کے فائدہ کیلئے کئی فلاحی پروگرامس شروع کئے تھے ۔ انہوں نے تلنگانہ میں پارٹی کی ابتر اور کمزور حالت کو دیکھتے ہوئے پارٹی کارکنوں میں جوش و جذبہ پیدا کرنے کی بھی کوشش کی ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی کارکنوں نے چیلنجس سے مقابلہ کیا ہے اور وہ کارکنوں کی بہتری کیلئے بھی اقدامات کرینگے ۔ نائیڈو کی ورنگل آمد سے قبل جہاں سے وہ خطاب کرنے والے تھے اس اسٹیج کے پچھلے حصے کو کچھ نامعلوم افراد نے نذر آتش کردیا تھا ۔ آج نائیڈو کے دورہ کے موقع پر ایم آر پی ایس کے کارکنوں نے جنگاؤں ‘ قاضی پیٹ اور ہنمنکنڈہ میں مسٹر نائیڈو کی واپسی کے دوران احتجاج کیا ۔

TOPPOPULARRECENT