تلنگانہ و آندھرا کیلئے آل انڈیا سروسیس عہدیداروں کے الاٹمنٹ کو قطعیت

133 آئی اے ایس 95 آئی پی ایس اور 58 آئی ایف ایس عہدیداروں کی خدمات ریاست تلنگانہ کے سپرد

133 آئی اے ایس 95 آئی پی ایس اور 58 آئی ایف ایس عہدیداروں کی خدمات ریاست تلنگانہ کے سپرد
حیدرآباد۔/6مارچ، ( سیاست نیوز) مرکزی حکومت نے تلنگانہ اور آندھرا پردیش کیلئے آل انڈیا سرویسس کے عہدیداروں کے الاٹمنٹ کو قطعیت دے دی ہے۔ مرکز کے ڈپارٹمنٹ آف پرسونل اینڈ ٹریننگ نے آل انڈیا سرویسس کے عہدیداروں کے الاٹمنٹ کی عبوری فہرست جاری کی تھی اور اس سلسلہ میں عہدیداروں سے اعتراضات طلب کئے تھے۔ مختلف عہدیداروں کے اعتراضات کی سماعت کے بعد مرکز نے الاٹمنٹ کو قطعیت دے دی ہے اور اس سلسلہ میں باقاعدہ احکامات جاری کردیئے گئے۔ تلنگانہ ریاست کیلئے 133آئی اے ایس، 95آئی پی ایس اور 58 آئی ایف ایس عہدیدار الاٹ کئے گئے۔ سابق میں عبوری طور پر الاٹمنٹ کے دوران جن چار عہدیداروں کو تلنگانہ کیلئے الاٹ کیا گیا تھا ان میں شانتا کماری کو چھوڑ کر دیگر عہدیداروں کو قطعی فہرست میں آندھرا پردیش الاٹ کردیا گیا جن میں وی کرونا، ایم پرشانتی اور اے وانی پرساد شامل ہیں۔ اسی طرح آندھرا پردیش کو پہلے الاٹ کردہ آئی پی ایس عہدیدار موہن بھاگوت کو قطعی فہرست میں تلنگانہ کیلئے الاٹ کردیا گیا۔ تلنگانہ میں خدمات انجام دینے والے جی ایچ ایم سی کمشنر سومیش کمار کے علاوہ سینئر عہدیدار پونم مالکونڈیا اور بعض دوسروں کو آندھرا پردیش کی فہرست میں برقرار رکھا گیا ہے۔ سومیش کمار نے انہیں آندھرا پردیش میں الاٹ کرنے کے خلاف اپیل کی تھی جس کی سماعت کے بعد انہیں دوبارہ آندھرا پردیش میں برقرار رکھا گیا۔ مرکز نے پہلی مرتبہ 10اکٹوبر کو عہدیداروں کی عبوری فہرست جاری کرتے ہوئے اعتراضات طلب کئے تھے جبکہ 26ڈسمبر کو دوسری مرتبہ فہرست جاری کی گئی جس میں بعض تبدیلیاں کی گئی تھیں۔ عہدیداروں کو 15دن میں اعتراضات داخل کرنے کی مہلت دی گئی تھی جن کا جائزہ لینے کے بعد قطعی فہرست جاری کردی گئی جو مرکز کے ڈپارٹمنٹ آف پرسونل اینڈ ٹریننگ کے ویب سائیٹ پر موجود ہے۔ عبوری الاٹمنٹ میں تلنگانہ کو 128آئی اے ایس عہدیدار الاٹ کئے گئے تھے ان میں سے 4کو ابھی تک کوئی ریاست الاٹ نہیں کی گئی۔ پہلی فہرست میں آندھرا پردیش کیلئے الاٹ کئے گئے جیش رنجن اور وکاس راج کو قطعی فہرست میں تلنگانہ کیلئے الاٹ کردیا گیا۔ اسی طرح تلنگانہ میں خدمات انجام دینے والی خاتون عہدیدار پونم مالکونڈیا اور سومیش کمار کو آندھرا پردیش میں ہی برقرار رکھا گیا ہے۔ سومیش کمار، پونم مالکونڈیا، جیش رنجن اور رونالڈ راس نے آندھرا پردیش کو الاٹ کئے جانے کے خلاف نمائندگی کرتے ہوئے تلنگانہ کو الاٹ کرنے کی خواہش کی تھی تاہم مرکزی حکومت نے اس اپیل کو نامنظور کردیا۔ سومیش کمار نے اپنے الاٹمنٹ کے خلاف سنٹرل اڈمنسٹریٹیٹو ٹریبونل میں اپیل کی ہے جو زیر التوا ہے۔ اسکی یکسوئی تک وہ تلنگانہ میں رہ سکتے ہیں۔ آندھرا پردیش کیلئے 161آئی اے ایس، 116آئی پی ایس اور 69آئی ایف ایس عہدیدار الاٹ کئے گئے۔ تلنگانہ کو الاٹ کردہ آئی پی ایس عہدیداروں میں ٹی پی داس، ارونا بہوگنا، نونیت رنجن، کے درگا پرساد، عبدالقیوم خاں، انوراگ شرما، سدیپ لکٹکیہ، تیج دیپ مینن، اومیش شراف، سی وی آنند، سندیپ شنڈلیہ، سرینواس ریڈی، مہیش بھاگوت، نوین چند، ایم کے سنگھ، اکن سبھروال، شاہنواز قاسم، تفسیر اقبال اور دوسرے شامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT