Monday , December 18 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کابینہ اور ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی اجلاس کی طلبی

تلنگانہ کابینہ اور ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی اجلاس کی طلبی

اسمبلی میں حکمت عملی اور مسلم تحفظات قرارداد کو قطعیت کا امکان
حیدرآباد ۔ 19۔ اکتوبر (سیاست نیوز) تلنگانہ اسمبلی اور قانون ساز کونسل کے 27 اکتوبر سے شروع ہونے والے اجلاس کی حکمت عملی طئے کرنے کیلئے ریاستی کابینہ اور ٹی آر ایس لیجسلیچر پارٹی کا اجلاس طلب کیا گیا ہے۔ پارٹی ذرائع کے مطابق 23 اکتوبر کو ریاستی کابینہ کا اجلاس منعقد ہوگا جس میں اسمبلی میں پیش کئے جانے والے سرکاری بلز، قراردادوں اور بحث کے موضوعات طئے کئے جائیں گے۔ 26 اکتوبر کو تلنگانہ بھون میں لیجسلیچر پارٹی کا اجلاس چیف منسٹر کے سی آر کی صدارت میں منعقد ہوگا۔ اس اجلاس میں اسمبلی کی حکمت عملی اور اپوزیشن کے حملوں کا جواب دینے کیلئے حکمت عملی طئے کی جائے گی۔ مجوزہ اجلاس میں اپوزیشن کی جانب سے مختلف موضوعات پر حکومت کو گھیرنے کی کوشش کی جا سکتی ہے۔ اپوزیشن متحدہ طور پر حکومت کی پالیسیوں کو نشانہ بنانے کا منصوبہ رکھتی ہے۔ حالیہ عرصہ میں کانگریس پارٹی اور تلنگانہ پولیٹیکل جے اے سی کی جانب سے حکومت کے خلاف مہم کا آغاز کیا گیا۔ بائیں بازو کی جماعتوں نے علحدہ طور پر مخالف حکومت یاترا کا آغاز کیا ہے ۔ مختلف اضلاع میں اپوزیشن قائدین دورہ کرتے ہوئے عوام سے ملاقاتیں کر رہے ہیں۔ اس صورتحال میں حکومت اسمبلی اجلاس میں پوری تیاری کے ساتھ شرکت کی خواہاں ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ کے سی آر نے 10 سرکاری بلز پیش کرنے کی تجویز پیش کی ہے ۔ اس سلسلہ میں مختلف محکمہ جات سے بل کے مسودات طلب کئے گئے ہیں۔ کابینہ کے اجلاس میں بلز پر غور کیا جائے گا۔ باوثوق ذرائع نے بتایا کہ حکومت مجوزہ اسمبلی سیشن میں بعض امور پر قرارداد منظور کرنے پر غور کررہی ہے۔ ان میں مسلم تحفظات اور ایس سی زمرہ بندی جیسے امور شامل ہیں۔ حکومت نے ان دونوں امور پر اسمبلی اور کونسل میں قرارداد منظور کرتے ہوئے مرکز کو روانہ کیا تھا ۔ مسلمانوں کے 12 فیصد تحفظات اور ایس سی زمرہ بندی کے حق میں قرارداد منظور کرتے ہوئے دوبارہ مرکز کو روانہ کیا جاسکتا ہے ۔ قرارداد کی منظوری میں حکومت کو کوئی قانونی رکاوٹ درپیش نہیں۔ مسلمانوں اور کمزور طبقات کی تائید حاصل کرنے کیلئے حکومت قرارداد دوبارہ منظور کرسکتی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ پسماندہ طبقات کے حق میں بھی قرارداد کی منظوری کا امکان ہے۔ تلنگانہ کے بی سی طبقات تحفظات میں اضافہ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ بی سی کمیشن اس مطالبہ کا جائزہ لے رہا ہے تاکہ تحفظات کی موجودہ 50 فیصد کی حد میں اضافہ کیا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT