Saturday , August 18 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کا آئی ٹی شعبہ غیر کارکرد یا وزارت بلدی نظم و نسق مفقود

تلنگانہ کا آئی ٹی شعبہ غیر کارکرد یا وزارت بلدی نظم و نسق مفقود

سرکاری ویب سائیٹ پر عدم اطلاعات، آن لائن خدمات پر کئی شبہات

حیدرآباد۔17 ڈسمبر(سیاست نیوز) ریاستی سطح پر حکومت کی کارکردگی کی شفافیت کو یقینی بنانے کے لئے حکومت کی جانب سے ٓٓآن لائن خدمات کا آغاز کیا جا رہاہے اور مختلف محکمہ جات کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات اور سرکاری احکامات کو عوام تک پہنچانے کیلئے سرکاری جی او جو جاری کئے جاتے ہیں انہیں ویب سائٹ پر ڈالا جاتا ہے اور محکمہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کی زیر نگرانی چلائے جانے والے ادارہ کی جانب سے ان سرکاری احکامات کو ان کے متعلقہ محکمہ جات کے اعتبار سے سرکاری ویب سائٹ پر ڈالا جاتا ہے ۔ ریاست تلنگانہ میں حکومت کی جانب سے شعبہ انفارمیشن ٹکنالوجی میں ترقی کے اور دیگر ریاستوں کے مقابلہ میں تیز رفتار ترقی کے دعوے کئے جاتے ہیں لیکن ریاست میں عملی طور پر آئی ٹی کی ترقی کا جائزہ لیا جائے تویہ ترقی ریاست کے محکمہ انفارمیشن ٹکنالوجی سے نکل کر ریاستی وزارت بلدی نظم و نسق تک بھی نہیں پہنچ پائی ہے۔ جی ہاں! ریاست تلنگانہ میں حکومت تلنگانہ کی جانب سے کئے جانے والی آئی ٹی شعبہ کی ترقی کے دعوؤں کی قلعی کھولنے کے لئے ریاستی وزارت بلدی نظم و نسق کی جانب سے جاری کئے جانے والے سرکاری احکامات کی تفصیلات ہیں۔ ریاستی حکومت کی ویب سائٹ telangana.gov.in پر موجود جی اوزکا جائزہ لیا جائے تو اس بات کا پتہ چلے گا کہ ریاست میں محکمہ انفارمیشن ٹکنالوجی غیر کارکرد ہے یا پھر ریاست میں وزارت بلدی نظم و نسق مفقود ہے کیونکہ ریاستی حکومت کی ویب سائٹ کے مطابق ریاستی وزارت بلدی نظم و نسق میں جاریہ سال کے دوران ماہ اپریل کے بعد سے اب تک کوئی سرکاری احکامات کی اجرائی عمل میں نہیں لائی گئی ہے اور اگر ایسا ہے تو محکمہ کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے اور اگر ایسا نہیں ہے تو پھر ریاستی حکومت کی ویب سائٹ چلانے والے ادارہ اور وزارت انفارمیشن ٹکنالوجی کی حالت انتہائی ابتر ہے اور اسے اپنی ہی حکومت کے ایک محکمہ کی تفصیلات کا علم نہیں ہے۔حکومت تلنگانہ کی ان دو وزارتوں کے قلمدان چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راؤ کے فرزند مسٹر کے ٹی راما راؤ کے پاس ہیں لیکن اس کے باوجود وزارت بلدی نظم و نسق کی جانب سے جاری کئے جانے والے احکامات کو آن لائن نہیں رکھا جانا کئی طرح کے شبہات کو جنم دیتا ہے۔ریاستی وزیر انفارمیشن و ٹکنالوجی مسٹر کے ٹی راما راؤ جو کہ ہائی ٹیک وزیر کی حیثیت سے جانے جاتے ہیں اور ان کے ٹوئیٹر استعمال کی کئی مثالیں ہیں جس پر کی جانے والی نمائندگی پر انہوں نے ردعمل ظاہر کرتے ہوئے مسائل کو حل کروایا ہے لیکن خود ان کی نگرانی میں خدمات انجام دینے والی ریاستی وزارت بلدی نظم و نسق کی جانب سے 9ماہ کے دوران کسی ایک بھی سرکاری حکم نامہ کو آن لائن نہ کیا جانا افسوسناک ہے کیونکہ سرکاری احکام کو آن لائن رکھنے کے اقدامات اس لئے کئے گئے تھے کیونکہ عوام کو ان احکامات تک رسائی حاصل ہوسکے لیکن ریاستی وزیر انفارمیشن ٹکنالوجی کی ہی وزارت بلدی نظم و نسق کی جانب سے سرکاری احکامات کو آن لائن نہ کیا جانا باعث حیرت بنا ہوا ہے۔حکومت تلنگانہ کی سرکاری ویب سائٹ کے مطابق وزارت بلدی نظم و نسق و شہری ترقیات کی جانب سے اپریل کے بعد سے اب تک کوئی جی او جاری نہیں کیا گیا ہے جبکہ ریاست کے دیگر محکمہ جات میں سرکاری احکامات کی اجرائی معمول کے مطابق ہے۔وزارت بلدی نظم و نسق کی جانب سے جاری کئے جانے والے احکامات کو آن لائن نہ کئے جانے کے متعلق شبہات بھی ظاہر کئے جانے لگے ہیں کیونکہ محکمہ داخلہ یا کسی اور محکمہ کی جانب سے اگر کو ئی رازدارانہ جی او بھی جاری کیا جاتا ہے تو اس کا نمبر جاری کردیا جاتا ہے اور متن آن لائن نہیں رکھا جاتا لیکن وزارت بلدی نظم و نسق میں ایسابھی نہیں ہے۔

TOPPOPULARRECENT