Tuesday , January 23 2018
Home / اضلاع کی خبریں / تلنگانہ کا مذاق اُڑانے والے اب کیوں خاموش ہیں؟

تلنگانہ کا مذاق اُڑانے والے اب کیوں خاموش ہیں؟

ریاست ترقی کی سمت گامزن، تمام تر فنڈس کی اجرائی : ایٹالہ راجندر

ریاست ترقی کی سمت گامزن، تمام تر فنڈس کی اجرائی : ایٹالہ راجندر
کریم نگر 10 اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) تلنگانہ کو علیحدہ ریاست کا درجہ دینے کی تحریک کے دوران سرزمین تلنگانہ پر بھی اہل تلنگانہ کا مذاق اُڑایا گیا۔ تلنگانہ تحریک چلانے والوں سے کہا گیا تھا کہ متحدہ ریاست آندھراپردیش میں علاقہ تلنگانہ ہی کی آمدنی زیادہ ہے۔ تلنگانہ بن جانے پر کچھ حاصل نہ ہوگا۔ ریاست کو چلانا مشکل ہوجائے گا اور ناممکن ہوگا۔ ملازمین کو تنخواہیں دینا بھی مشکل ہوجائے گا۔ اس طرح کا مذاق اُڑانے والے اب خاموش کیوں ہیں۔ اُن سے کوئی جواب بن نہیں پارہا ہے۔ یہاں جمی کنٹہ منڈل پریشد کے دفتر میں منعقدہ جائزہ اجلاس میں بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے ریاستی وزیر فینانس و سیول سپلائز ایٹالہ راجندر نے ان خیالات کا اظہار کیا۔ اُنھوں نے کہاکہ چیف منسٹر کے سی آر کے اقتدار کے 9 میں ریاست تلنگانہ ہر شعبہ میں ترقی کی راہ پر گامزن ہے اور اس کی ترقی کا سفر جاری ہے۔ اُنھوں نے کہاکہ ترقیاتی پروگراموں کی عمل آوری کے لئے فنڈس کی کوئی کمی نہیں ہے۔ ہر گھر کو محفوظ پینے کا پانی پہنچایا جائے گا۔ ہر گاؤں میں سی سی روڈ کی تعمیر کے لئے 10 لاکھ روپئے منظور کئے جارہے ہیں۔ چار سو کروڑ کے صرفہ سے حلقہ اسمبلی کو ترقی دی جائے گی۔ انھوں نے کہاکہ پہلی بار دیہی سطح پر منتخب نمائندے ایم پی ٹی سی مقامی عوام کے مسائل کی یکسوئی کے لئے دستیاب رہیں گے۔ اُنھوں نے مقامی نمائندوں کو عوامی کے مسائل کے حل کے کوشش کرنے کا مشورہ دیا۔ انھوں نے کہاکہ وہ ضلع کی ترقی کے لئے تمام تر کوشش کریں گے۔ ایم پی پی گنگا راؤ ، شیام کی صدارت میں منعقدہ اس جائزہ اجلاس میں زیڈ پی ٹی سی رکن اے پرشا لنگم، ایم پی ڈی او رمیش، تحصیلدار رجنی، سرپنچ ایم پی ٹی سی، مختلف محکمہ جات کے عہدیدار شریک رہے۔ وزیر فینانس ایٹالہ راجندر نے مشن کاکتیہ، پینے کے پانی کی فراہمی کے لئے شروع کردہ کاموں کی کارکردگی کا جائزہ لیا۔ انھوں نے تالابوں کی صفائی کے کاموں کا بھی جائزہ لیا۔ اُنھوں نے اپوزیشن پارٹیوں کے اس الزام کا تذکرہ کیاکہ مشن کاکتیہ میں بدعنوانی پائی جاتی ہے اور استفسار کیاکہ مشن کاکتیہ کے کاموں کے آغاز سے قبل ہی کس طرح بدعنوانیوں کا آغاز ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT