Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کا ہر شہری 39,779 کا مقروض

تلنگانہ کا ہر شہری 39,779 کا مقروض

حیدرآباد ۔ 14 ۔ مارچ : ( سیاست نیوز ) : حکومت تلنگانہ کی جانب سے بڑے پیمانے پر قرض حاصل کرنے کے بعد تلنگانہ کے ہر شہری پر 39,779 روپئے کے قرض کا بوجھ عائد ہوگیا ہے ۔ ہر سال اس میں مزید اضافہ ہونے کا امکان ہے ۔ تشکیل ریاست تلنگانہ 2 جون 2014 تک ریاست تلنگانہ پر 61,710 کروڑ روپئے کا قرض عائد تھا ۔ سال 2014-15 میں 83,845 کروڑ سال 2015-16 میں 1,40,523 کروڑ تک پہونچ گیا ہے ۔ ہر سال ریاست پر قرض کے بوجھ میں بدستور اضافہ ہورہا ہے ۔ 2017-18 کے قرض کو جوڑ لینے کے بعد ریاست میں قرضہ جات 1,40,523 کروڑ تک پہونچ سکتے ہیں ۔ 2011 کی مردم شماری کے حساب سے تلنگانہ کی جملہ آبادی 3,51,93,978 ہے ۔ اس کے لحاظ سے ہر شہری پر 39,779 روپئے کا قرض عائد ہوگا ۔ 2015-16 کے بجٹ قرض کا تناسب 16.18 فیصد تھا ۔ 2016-17 میں قرض کا تناسب 17.55 فیصد 2017-18 میں مزید بڑھ کر 18.51 فیصد ہوجائے گا ۔ ایک طرف جہاں ریاست پر قرض کا بوجھ بڑھ رہا ہے وہیں دوسری طرف سود کے بوجھ میں بھی بے تحاشہ اضافہ ہورہا ہے ۔ 2016-17 کے بجٹ میں حکومت کی جانب سے حاصل کردہ قرض پر 7706.44 کروڑ روپئے سود ادا کیا گیا ۔ 2017-18 میں ریاست کے قرض پر سود بڑھ کر 11,138,60 کروڑ تک پہونچ جائے گا ۔ سود ادا کرنے میں 4659.47 کروڑ روپئے کا اضافہ ہوجائے گا ۔ اس کے علاوہ ریاست کے مختلف کارپوریشنس کی جانب سے 45 ہزار کروڑ روپئے کا قرض حاصل کیا گیا جس کو حکومت نے ضمانت دی ہے ۔ اس کی شرح سود بھی علحدہ ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT