Wednesday , December 12 2018

تلنگانہ کیلئے علیحدہ وقف ٹریبونل کی تشکیل کیلئے احکام جاری

حیدرآباد۔/23ڈسمبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت نے ریاست کیلئے علحدہ وقف ٹریبونل کے قیام کا فیصلہ کیا ہے۔ تلنگانہ وقف ٹریبونل کی تشکیل کے سلسلہ میں سکریٹری اقلیتی بہبود احمد ندیم نے آج احکامات جاری کئے۔ آندھرا پردیش کی تقسیم کے بعد وقف ٹریبونل کی تقسیم بھی ناگزیر تھی۔ حکومت نے آندھرا پردیش تنظیم جدید بل 2014 کے مطابق تلنگانہ کیلئے علحدہ وقف ٹریبونل کی تشکیل کو منظوری دے دی ہے۔ جی او کے مطابق ٹریبونل کے صدرنشین کا تعلق سیشن جج رتبہ سے ہوگا اور ڈسٹرکٹ سیشن جج یا سیول جج رتبہ سے تعلق رکھنے والوں کو صدرنشین نامزد کیا جائے گا۔ ٹریبونل میں ایک رکن اسٹیٹ سیول سرویس سے تعلق رکھنے والا ہوگا جس کا رتبہ ایڈیشنل ڈپٹی مجسٹریٹ کے برابر ہوگا۔ مسلم پرسنل لاء اور دیگر قوانین پر عبور رکھنے والی شخصیت کو ٹریبونل میں رکن نامزد کیا جائے گا۔ موجودہ وقف ٹریبونل آندھرا پردیش ٹریبونل کی حیثیت سے شمار کیا جائے گا۔ واضح رہے کہ اقلیتی جائیدادوں کے تحفظ اور غیر مجاز قبضوں کی برخواستگی و دیگر اُمور کی وقف ٹریبونل سماعت کرتا ہے۔ ٹی آر ایس حکومت نے وقف بورڈ کو جوڈیشیل اختیارات دینے کا اعلان کیا لیکن ابھی تک اس سلسلہ میں کوئی پیشرفت نہیں کی گئی۔دوسری طرف وقف ٹریبونل میں گزشتہ 11ماہ سے پریسائیڈنگ آفیسر نہیں ہے جس کے باعث 1912 مقدمات طویل عرصہ سے زیر التواء ہیں۔ ریاست کی تقسیم کے بعد حکومت نے ٹریبونل کی عدم تقسیم کا بہانہ بناتے ہوئے پریسائیڈنگ آفیسرس کا تقرر عمل میں نہیں لایا۔ اب جبکہ ٹریبونل کی تقسیم کے احکامات جاری کردیئے گئے توقع کی جاسکتی ہے کہ حکومت جلد ہی صدرنشین اور ارکان کا تقرر عمل میں لائے گی۔ جی او کے مطابق تلنگانہ وقف ٹریبونل میں مزید جائیدادوں کی منظوری کے سلسلہ میں احکامات علحدہ طور پر جاری کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT