Friday , December 15 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کی ترقی کے لیے زائد فنڈ منظور کرنے مرکز سے مطالبہ

تلنگانہ کی ترقی کے لیے زائد فنڈ منظور کرنے مرکز سے مطالبہ

لوک سبھا میں مطالبات زر پر مباحث ، ٹی آر ایس ایم پی بی ونود کمار کا خطاب
حیدرآباد۔/8ڈسمبر، ( سیاست نیوز) ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ بی ونود کمار نے تلنگانہ کی ترقی کیلئے مرکز سے زائد فنڈز کی منظوری کا مطالبہ کیا ہے۔ لوک سبھا میں آج بجٹ 2016-17 کے اضافی مطالبات زر پر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے ونود کمار نے کہا کہ تلنگانہ کی ترقی کیلئے مرکزکو فراخدلانہ فنڈز جاری کرنے چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ نئی ریاست تلنگانہ کو ترقی کے سلسلہ میں کئی چیلنجس کا سامنا ہے اور حکومت کم وسائل اور کمزور معاشی موقف کے باوجود ریاست کو ترقی کی راہ پر گامزن کرچکی ہے۔انہوں نے کہا کہ تلنگانہ میں کئی پراجکٹس ایسے ہیں جن کی تکمیل کیلئے مرکز کی مداخلت ضروری ہے۔ ونود کمار نے قومی شاہراہوں کی تعمیر کیلئے فنڈز کی اجرائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اس سلسلہ میں شخصی طور پر مرکزی وزیر سے ملاقات کرتے ہوئے نمائندگی کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ قومی شاہراہوں کی تعمیر کے ذریعہ ریاست کو تیزی سے ترقی دی جاسکتی ہے۔ اسی دوران ایک اور رکن پارلیمنٹ سیتا رام نائیک نے آندھرا پردیش میں پولاورم پراجکٹ کی تعمیر میں قواعد کی خلاف ورزی کی شکایت کی۔ انہوں نے کہا کہ ضروری منظوریوں کے بغیر ہی آندھرا پردیش حکومت نے پراجکٹ کی تعمیر کو جاری رکھا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس پراجکٹ سے لاکھوں قبائیلی افراد متاثر ہوسکتے ہیں اور ان کا کوئی پرسان حال نہیں ہے۔ سیتا راما نائیک نے کہا کہ ان کی حکومت پراجکٹ کی تعمیر کے خلاف نہیں ہے تاہم وہ چاہتے ہیں کہ پراجکٹ کی بلندی میں کمی کی جائے تاکہ قبائیلی علاقوں کو زیر آب آنے سے بچایا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ اس پراجکٹ کے سلسلہ میں حکومت اور دیگر گوشوں سے جو اعتراضات پیش کئے جارہے ہیں ان پر فوری توجہ اور کارروائی ہونی چاہیئے تاکہ قبائیلی خاندانوں کو بے گھر ہونے سے بچایا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT