Saturday , December 16 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کی عوام میں حکمران پارٹی ٹی آر ایس کے خلاف ناراضگی

تلنگانہ کی عوام میں حکمران پارٹی ٹی آر ایس کے خلاف ناراضگی

دولت کی تقسیم ٹی آر ایس کے لیے الٹا ثابت ہوگا ، وی ہنمنت راؤ کانگریس رکن راجیہ سبھا کا بیان
حیدرآباد ۔ 16 ۔ مئی : ( سیاست نیوز ) : سکریٹری اے آئی سی سی و رکن راجیہ سبھا مسٹر وی ہنمنت راؤ نے پالیرو اسمبلی حلقہ کے ضمنی انتخاب میں دولت کی تقسیم کا معاملہ ٹی آر ایس کے لیے الٹا ہوجانے کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ عوام میں حکمران جماعت کے خلاف ناراضگی پائی جاتی ہے ۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اس موقع پر ترجمان مسٹر جی نرنجن جنرل سکریٹری تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر بلوکشن بھی موجود تھے ۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ پالیرو اسمبلی حلقہ میں ٹی آر ایس دوسروں کے لیے کھودے گئے گڑھے میں خود گرچکی ہے ۔ دولت کے بل بوتے پر کامیاب ہونے کی کوشش ٹی آر ایس کے لیے نقصان دہ ثابت ہوئی ہے ۔ ٹی آر ایس نے اپنے امیدوار ٹی ناگیشور راؤ کی کامیابی کے لیے ایک ووٹ کی قیمت 3 ہزار روپئے ادا کرنے کا رائے دہندوں سے وعدہ کیا تھا تاہم صرف فی ووٹ 500 روپئے ہی ادا کئے ہیں جس سے رائے دہندوں میں ناراضگی پیدا ہوگئی ہے ۔ جو ٹی ار ایس کے لیے نقصان دہ ثابت ہورہی ہے ۔ عوام میں کانگریس کے لیے ہمدردی پائی جاتی ہے ۔ انہوں نے کانگریس کے کارکنوں سے اپیل کی کہ وہ 21 مئی کو آنجہانی راجیو گاندھی کی 25 ویں برسی کا بڑے پیمانے پر اہتمام کریں اور سارے تلنگانہ یوم مخالف دہشت گردی منائیں ۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے کہا کہ آنجہانی راجیو گاندھی نے اپنی صلاحیتوں کو منواتے ہوئے ہندوستان کو 21 ویں صدی میں پہونچانے کا خواب دیکھا تھا اس کو پورا کرنے کی ذمہ داری نوجوان نسل پر عائد ہوتی ہے ۔ انفارمیشن ٹکنالوجی کا سارے ملک میں پھیلا ہوا جال ، ٹیلی فون کی گھر گھر تک رسائی راجیو گاندھی کی دین ہے ۔ بوفورس معاملے میں راجیو گاندھی کو بدنام کیا گیا 13 سال بعد عدالت نے آنجہانی قائد کو بے قصور قرار دیا تاہم کارگل جنگ میں یہی بوفورس ہتھیار کار آمد ثابت ہوئے ۔ راجیو گاندھی نے 18 سال عمر مکمل کرنے والے نوجوانوں کو حق رائے دہی کا موقع اور  مقامی اداروں میں خواتین کو تحفظات فراہم کیا ۔ مسٹر وی ہنمنت راؤ نے وزیر اعظم نریندر مودی پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ وہ ملک کے نوجوانوں کے لیے رول ماڈل بننے کے بجائے ماں کی خدمات کو بھی سستی شہرت حاصل کرنے کے لیے استعمال کرنے کا الزام عائد اور کہا کہ سستی شہرت کے معاملے میں مودی نے اپنی ماں کو بھی نہیں بخشا ہے ۔ جس کا عوام میں غلط پیغام پہونچا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT