Wednesday , August 15 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کی 800 مساجد میں 8 جون کو سرکاری دعوت افطار

تلنگانہ کی 800 مساجد میں 8 جون کو سرکاری دعوت افطار

ہر مسجد کو ایک لاکھ کی منظوری،بے قاعدگیوں کی صورت میں کارروائی کا انتباہ: شاہنواز قاسم
حیدرآباد ۔ 5 ۔جون (سیاست نیوز) تلنگانہ کے 31 اضلاع کی 800 مساجد میں 8 جون کو حکومت کی جانب سے اجتماعی دعوت افطار اور طعام کا انتظام کیا جائے گا۔ اخراجات کے طور پر حکومت نے مساجد کو فی کس ایک لاکھ روپئے جاری کئے ہیں۔ حیدرآباد میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی دعوت افطار کے دن ہی ریاست کی 800 مساجد میں دعوت افطار کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ ایک ہی دن میں حکومت کی جانب سے افطار مکمل ہوجائے۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود شاہنواز قاسم نے بتایا کہ اضلاع میں ضلع کلکٹرس کے ذریعہ مساجد کی رقم حوالے کی جارہی ہے جبکہ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں 432 مساجد اور یتیم خانوں کے اکاؤنٹ میں ایک لاکھ روپئے جمع کئے گئے ۔ انہوں نے کہا کہ 60 مساجد ایسی ہیں جن کے پاس کمیٹی کا اکاؤنٹ نہیں ہے یا پھر جو اکاؤنٹ تفصیلات داخل کی گئیں وہ درست نہیں تھی۔ لہذا ان مساجد کو رقم کی منتقلی میں تاخیر ہوئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ان معاملات میں مسجد کمیٹی کے صدر سے حلفنامہ حاصل کرتے ہوئے ان کے اکاؤنٹ میں رقم منتقل کی جارہی ہے۔ اندرون دو یوم شہر اور اضلاع کی تمام مساجد کی رقم منتقل کردی جائے گی۔ شاہنواز قاسم نے کہا کہ ہر مسجد میں 500 افراد کیلئے افطار اور کھانے کا انتظام رہے گا ۔ حکومت نے ایسی مساجد کا انتخاب کیا ہے جن کے اطراف غریب آبادی ہو۔ گریٹر حیدرآباد کے حدود میں ہر بلدی وارڈ سے دو مساجد کا انتخاب کیا گیا جبکہ ہر اسمبلی حلقہ سے چار مساجد منتخب کی گئی ۔ شیعہ ، مہدوی مساجد اور یتیم خانوں کی تعداد 19 ہے۔ انہوں نے کہا کہ باقی 95 اسمبلی حلقوں میں 368 مساجد میں دعوت افطار کا اہتمام کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ رمضان گفٹ پیاک کی تقسیم کا 10 رمضان سے آغاز ہوچکا ہے اور کئی مقامات پر تقسیم کا عمل مکمل ہوگیا۔ انہوں نے بتایا کہ رمضان گفٹ پیاک کی تقسیم اور دعوت افطار کے اہتمام میں بے قاعدگیوں کا کوئی امکان نہیں ہے۔ جہاں کہیں سے کوئی شکایت موصول ہوگی ، مسجد کمیٹی کے خلاف کارروائی کی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ پولیس کے علاوہ وقف بورڈ اور گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے ذریعہ ملبوسات کی تقسیم پر نظر رکھی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بعض علاقوں میں مقامی قائدین کی جانب سے کمیشن طلب کرنے کی صورت میں پولیس میں شکایت کی جاسکتی ہے۔ شاہنواز قاسم نے کہا کہ ابھی تک اس طرح کی کوئی شکایت نہیں ملی ۔ انہوں نے کہا کہ متعلقہ منڈل ریونیو آفیسرس کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ دعوت افطار کے انتظامات اور خرچ پر نظر رکھیں۔ مساجد کمیٹیوں کو دعوت افطار کے بعد خرچ کی تفصیلات پیش کرنی ہوگی۔ ڈائرکٹر اقلیتی بہبود نے بتایا کہ گفٹ پیاک کے تحت ایک ساڑی ، شرٹ شلوار اور کرتا پاجامہ کا کپڑا دیا جائے گا ۔ 473 یتیم بچوں کو تیار شدہ ملبوسات دیئے جائیں گے۔ چیف منسٹر کی دعوت افطار میں 50 یتیم بچوں کو ملبوسات کا تحفہ دیا جائے گا۔ گفٹ پیاک کا کپڑا تلنگانہ ٹکسٹائیلس ویوورس کارپوریشن سے حاصل کیا گیا ہے ۔ سابق میں 385 میں تین جوڑے سربراہ کئے گئے تھے، اس مرتبہ 465 روپئے میں حاصل کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 8 جون کو لال بہادر اسٹیڈیم پر چیف منسٹر کی دعوت افطار کی تمام تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT