Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے اساتذہ اور وظیفہ یاب کے مسائل کی یکسوئی کا مطالبہ

تلنگانہ کے اساتذہ اور وظیفہ یاب کے مسائل کی یکسوئی کا مطالبہ

حیدرآباد ۔ 9 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : ریاست میں برسر اقتدار حکومت تلنگانہ کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر تلنگانہ کے تمام برسر خدمت اساتذہ اور موظف اساتذہ کو واجب الادا 10 ویں پی آر سی کے تحت یکم جولائی سے 63 فیصد فٹمنٹ کے ساتھ پی آر سی کی ادائیگی کو یقینی بنائے ، برسر خدمت اساتذہ اور وظیفہ یابوں کو ہیلت کارڈ کے ذریعہ تمام پرائیوٹ اور کارپوری

حیدرآباد ۔ 9 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : ریاست میں برسر اقتدار حکومت تلنگانہ کو چاہئے کہ وہ فوری طور پر تلنگانہ کے تمام برسر خدمت اساتذہ اور موظف اساتذہ کو واجب الادا 10 ویں پی آر سی کے تحت یکم جولائی سے 63 فیصد فٹمنٹ کے ساتھ پی آر سی کی ادائیگی کو یقینی بنائے ، برسر خدمت اساتذہ اور وظیفہ یابوں کو ہیلت کارڈ کے ذریعہ تمام پرائیوٹ اور کارپوریٹ ہاسپٹلس میں مفت علاج کی سہولت اور ری ایمبرسمنٹ کے طرز عمل پر موثر عمل آوری کے علاوہ اساتذہ اور پنشنرس کو درپیش مسائل کے حل کے لیے ضروری اقدامات کرے ۔ بصورت دیگر ٹی ٹی جے اے سی کی جانب سے بڑے پیمانے پر احتجاجی مظاہرے منظم کئے جائیں گے ۔ ان خیالات کا اظہار آج چیرمین تلنگانہ ٹیچرس جوائنٹ ایکشن کمیٹی مسٹر پی وینکٹ ریڈی ، سکریٹری جنرل تلنگانہ ٹیچرس جوائنٹ ایکشن کمیٹی مسٹر بی بھوجنگ راؤ نے پی آر ٹی یو بھون میں منعقدہ پریس کانفرنس کو مخاطب کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اساتذہ اور پنشنرس کو 10 ویں پی آر سی کی تاہم ادائیگی عمل میں نہیں لائی گئی اور اس طرح سے ہیلت کارڈس کی اجرائی عمل میں لائی جاچکی ہے لیکن اس پر عمل ندارد ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ کئی اسکولس میں ریشنلائیزیشن جی او نمبر 6 کے تحت کئی مدارس بند ہونے کو تیار ہیں جی او 6 کی منسوخی عمل میں لایا جائے ۔ انہوں نے بتایا کہ پنچایت راج اساتذہ کے سرویس رولس کی عمل آوری میں متحدہ آندھرا پردیش کی حسب سابق رولس کا طریقہ کار جاری ہے ۔ جب کہ علحدہ ریاست تلنگانہ کی تشکیل عمل میں آنے کے باوجود قدیم سرویس رولس پر عمل آوری باعث تشویش ہے جس کو جدید سرویس رولس میں تبدیل کیا جائے اور کہا کہ 398 روپئے کی تنخواہ پر کام کرنے والے اساتذہ کو نوشنل انکریمنٹ کی منظوری دی جائے ۔ سرکاری مدارس میں گریڈنگ سسٹم کو برخاست کردیا جائے اور سی سی آئی طریقہ کار کو منسوخ کردیا جانا چاہئے اور کہا کہ مدارس میں ودیا والینٹرس کے تقررات کی اشد ضرورت ہے اور تمام ضلع پریشد اسکولوں میں گریڈ I تلگو ، ہندی پنڈت اور پی ڈی کی جائیدادوں کو منظوری دی جائے علاوہ ازیں تمام مدارس میں موجود مخلوعہ جائیدادوں پر فوری طور پر تقررات کے لیے ڈی ایس سی کا اعلان کرے ۔ اس موقع پر تلنگانہ ٹیچرس جوائنٹ ایکشن کمیٹی قائدین مسرز ایم ملیا ، بی سومیشور راؤ ، کو چیرمین عبداللہ ، منوہر ، دیشپانڈے ، وی بالا ہیرو ، جی سومیا ، ڈاکٹر ایس وجئے بھاسکر ، ایس لکشما ریڈی ، چندرا موہن ، ایم جناردھن ریڈی ، ایم مانکیم بھی موجود تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT