تلنگانہ کے اضلا ع میں نئے ایرپورٹس کا منصوبہ نظام آباد

حیدرآباد ۔9۔اپریل ۔(سیاست ڈاٹ کام)۔ریاست تلنگانہ میں نظام آباد کو کئی اعتبار سے اہمیت حاصل ہے کیونکہ حیدرآباد اور نظام آباد کے معاشی تعلقات نظام کے دور سے ہی موجود ہیں اور اب تلنگانہ حکومت کی جانب سے مختلف اضلاع میں ایرپورٹس کی تعمیر اور موجودہ ہوائی پٹی کو ایرپورٹ میں تبدیل کرنے کے منصوبے کے بعد نظام آباد ایک مرتبہ پھر شہہ سرخیوں میں آچکا ہے۔ نظام آباد میں کئی برس قبل پہلے ہی ایرپورٹ کے قیام کیلئے جاکرن پلی منڈل میں 1,600 ایکڑ اراضی کی نشاندہی کی گئی تھی لیکن نظام آباد ضلع کے انتظامیہ اور ریاستی حکومت کے درمیان اس ضمن میں کوئی تبادلہ خیال نہیں ہوا اور نہ ہی ضلعی عہدیداروں نے اس ضمن میں کوئی پیشرفت دکھائی تھی۔ مذکورہ منصوبہ کیلئے اراضی کی نشاندہی کی گئی تھی لیکن اس کے بعد نہ ہی ریاستی حکومت کے عہدیداروں اور نہ ہی ایرپورٹ اتھاریٹی کے ارباب مجاز نے اس اراضی کا جائزہ لیا جس کی وجہ سے نظام آباد میں ایرپورٹ کا یہ منصوبہ برفدان کی نذر ہوگیا حالانکہ کچھ عرصہ قبل رکن پارلیمنٹ کے کویتا نے یہاں میڈیا نمائندوں سے اظہارخیال میں کہا تھا کہ نظام آباد میں ایرپورٹ کے قیام کیلئے مرکزی حکومت کو جو تجویز پیش کی گئی تھی اسے حکومت نے نہ ہی منظور کیا اور نہ ہی انکار کیا۔ ریاستی حکومت پھر ایک مرتبہ تعلیمی اعتبار سے اہمیت کے حامل شہر نظام آباد میں ایرپورٹ کے قیام کیلئے کوشاں ہیں۔ یہاں اس بات کا تذکرہ اہمیت کا حامل ہیکہ حیدرآباد سے دیگر مقامات کیلئے نظام آباد کے براہ راست سڑکوں کے ذریعہ سفر کیا جاتا ہے تو حیدرآباد سے نظام آباد کی سڑکیں انتہائی شاندار ہیں اور حیدرآباد سے ناندیڑ، اورنگ آباد اور دیگر مقامات کیلئے سفر انتہائی تیز رفتار اور شاندار ہوتا ہے کیونکہ یہ شاہراہیں انتہائی شاندار ہیں۔ ان حالات میں اگر نظام آباد میں ایرپورٹ کا قیام عمل میں آتا ہے تو یہ نہ صرف قومی بلکہ بین الاقوامی فلائٹس کیلئے ایک شاندار مقام بن سکتا ہے بلکہ شاہراہوں کے ذریعہ تلنگانہ اور مہاراشٹرا کے درمیان اہم مقامات کے درمیان سفر بھی عوام کیلئے آرام دہ ہوجائے گا۔ ریاست تلنگانہ کے قیام کے بعد نظام آباد کو کافی اہمیت حاصل ہوئی ہے اور امید کی جارہی ہیکہ عنقریب نظام آباد سے طیاروں کی پروازیں بھی حقیقت میں تبدیل ہوجائیں گی۔

TOPPOPULARRECENT