Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے اقلیتی اقامتی اسکولس کو مخصوص بجٹ سے چلایا جائے

تلنگانہ کے اقلیتی اقامتی اسکولس کو مخصوص بجٹ سے چلایا جائے

ایس آئی او تلنگانہ کی پریس کانفرنس میں کلیم احمد و دیگر کا خطاب
حیدرآباد /12 مارچ ( سیاست نیوز ) ریاست تلنگانہ کے بجٹ برائے مالیاتی 2018-19 میں شعبہ تعلیم میں حصہ آوری کیلئے ریاست نے گذشتہ سالوں میں شعبہ تعلیم کے خرچ 4.1 فیصد کی کمی کی ہے اور ریاست تلنگانہ کا سالانہ خرچ دیگر ریاستوں آندھرا ، بہار اور چھتیس گڑھ سے بھی کم ہے ۔ تلنگانہ ا قلیتی اقامتی اداروں کو مخصوص اور علحدہ اقلیتی منصوبے کے تحت چلایا جائے ۔ یہ بات آج برادر کلیم احمد خان اسٹیٹ سکریٹری ایس آئی او تلنگانہ ، ڈاکٹر طلحہ فیاض الدین سٹی پریسیڈنٹ ایس آئی او نے آج این ایس ایس حیدر گورہ میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔انہوں نے کہا کہ نئی ریاست کے وجود میں آنے کے بعد حکومت سے کئی امیدیں وابستہ تھیں ۔تعلیم اور خواندگی کو عام کرنے اس کے بنیادی ترجیحات میں تھا اس لئے کہ اس میں کامیابی حاصل ہوتو ریاست کی ترقی اور پھلنے پھولنے کے پورے مواقع بھی حاصل ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے حکومت سے مانگ کی کہ ایک کمیشن کا قیام عمل میں لایا جائے ۔ تلنگانہ اقلیتی اقامتی اداروں TMREIS کو مخصوص اور علحدہ اقلیتی منصوبے کے تحت چلایا جائے ۔ انہو ںنے کہا کہ تعلیمی بجٹ کا کم از کم 10 فیصد ریاستی جامعات میں تحقیق پر لگایا جائے ۔ اس لئے کہ عثمانیہ ، کاکتیہ ساتاواہنا اور تلنگانہ یونیورسٹیز میں تحقیق پر بھاری کٹوتی اور حکومت جامعہ انتظامیہ کی جانب سے لاپرواہی مایوس کن صورتحال کی غمازی کر رہی ہے ۔ اس جانب خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT