Friday , November 24 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے رجسٹرڈ عاشورخانوں کو 20 کروڑ روپئے جاری کئے جائیں

تلنگانہ کے رجسٹرڈ عاشورخانوں کو 20 کروڑ روپئے جاری کئے جائیں

صدر آل انڈیا شیعہ آرگنائزیشن مسٹر میر ہادی علی کا حکومت سے مطالبہ
حیدرآباد ۔ 12ستمبر (راست) جناب میر ہادی علی صدر آل انڈیا شیعہ آرگنائزیشن سابق (شیعہ) رکن آندھراپردیش اسٹیٹ وقف بورڈ نے چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے سی آر اور ڈپٹی چیف منسٹر مسٹر محمود علی، پرنسپل سکریٹری محکمہ اقلیتی بہبود کو یادداشت روانہ کرتے ہوئے ریاست تلنگانہ کے درج رجسٹرڈ، 11 ہزار عاشورخانوں کو کم از کم اس سال 20 کروڑ روپئے چیف منسٹر گرانٹ ان ایڈ وقف بجٹ سے فی الفور جاری کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اس سال محرم کا آغاز 14 اکٹوبر 2015ء سے ہورہا ہے۔ صرف ایک ماہ کا وقت رہ گیا ہے۔ ریاست کے منہدمہ مخدوش حالت کے قدیم عاشورخانہ جات جہاں ایستادگی علم مبارک، مجالس ماتم، فاتحہ نذر خوانی دی جاتی ہے اور جہاں ریاست کے علاوہ بیرون ریاست کے ہندو، مسلم ہزارہا عقیدتمند شرکت کرتے ہیں جو قطب شاہی دور، نظام دورحکومت سے آج تک تاریخی محرم نہایت عقیدت و احترام سے منایا جاتا ہے جہاں کہیں عاشورخانہ جات نہ صرف شہر حیدرآباد، رنگاریڈی بلکہ تلنگانہ کے تمام اضلاع میں موجود ہیں جہاں آج بھی پانی کا بورویل بوسیدہ کویلو اور اسبسطاس کے چھتوں کی تبدیلی ضروری ہے۔ طہارت خانہ، باونڈری وال، فرش سیلو، آہک پاشی اور برقی سربراہی کا مسئلہ ہنوز حل طلب ہے۔ جناب میر ہادی علی شیعہ رہنما قائد نے چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے سی آر اور نائب وزیراعلیٰ جناب محمود علی کو دیئے گئے مکتوب میں پرزور مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ اب وقت کم ہے۔ جلد سے جلد محرم کا اجلاس طلب کرتے ہوئے تمام ڈسٹرکٹ کلکٹرس سے منہدمہ عاشورخانوں کی فہرست طلب کرتے ہوئے فی الفور 20 کروڑ روپئے گرانٹ ان ایڈ جاری کی جائے جس کیلئے آج شیعہ مسلمانوں میں بے چینی پھیلی ہوئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT