Wednesday , November 22 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے سرکاری و امدادی اردو مدارس کو 50 ہزار کی امداد ، اسکیم کا اندرون دو یوم اعلامیہ

تلنگانہ کے سرکاری و امدادی اردو مدارس کو 50 ہزار کی امداد ، اسکیم کا اندرون دو یوم اعلامیہ

حیدرآباد۔/13نومبر، ( سیاست نیوز) تلنگانہ کے 250 اردو میڈیم سرکاری مدارس میں انفراسٹرکچر کی فراہمی کے سلسلہ میں حکومت نے نئی اسکیم تیار کی ہے جس کے تحت اردو اکیڈیمی کے ذریعہ ہر اسکول کو 50ہزار روپئے کی امداد فراہم کی جائے گی۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے اقلیتی بہبود کے عہدیداروں کو ہدایت دی کہ وہ اس اسکیم کے سلسلہ میں اعلامیہ جلد جاری کریں تاکہ آئندہ تعلیمی سال کے آغاز سے قبل سرکاری اردو میڈیم مدارس میں بنیادی سہولتوں کی فراہمی کو یقینی بنایا جاسکے۔ یہ پہلا موقع ہے  جب انفراسٹرکچر کی فراہمی کے سلسلہ میں ہر اسکول کو 50 ہزار روپئے کی امداد کا فیصلہ کیا گیا۔ اردو اکیڈیمی میں انفراسٹرکچر کی فراہمی سے متعلق موجودہ اسکیم کے تحت صرف 4تا5 ہزار روپئے ہی بطور امداد دیئے جاتے ہیں جس سے اسکول کی بنیادی ضرورتوں کی تکمیل ممکن نہیں ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے ہدایت دی کہ زائد طلبہ والے سرکاری اردو میڈیم مدارس کا انتخاب کرتے ہوئے پہلے مرحلہ میں 250اسکولوں کو فی کس 50ہزار روپئے امداد فراہم کی جائے کیونکہ کئی مدارس میں صاف پینے کے پانی، ٹائیلٹس کی عدم موجودگی اور فرنیچر نہ ہونے کی شکایات موصول ہوئی ہیں۔ کئی سرکاری اسکولوں میں طلبہ کو زمین پر بٹھاکر تعلیم دی جاتی ہے۔ مدارس کی عمارتوں کی خستہ حالی کا یہ عالم ہے کہ  معمولی بارش کی صورت میں عمارت کے منہدم ہونے کا خطرہ پیدا ہوجاتا ہے۔ اسی دوران سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور نے بتایا کہ اندرون دو یوم اس اسکیم کیلئے اعلامیہ جاری کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ صرف سرکاری اردو میڈیم مدارس کے ذمہ دار اسکیم سے استفادہ کیلئے درخواست دے سکتے ہیں۔ امداد کے حصول کیلئے درخواستوں کی وصولی کی تاریخ اور دیگر شرائط و قواعد کا اندرون دو یوم اعلان کیا جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ سرکاری مدارس کے علاوہ امدادی مدارس کو بھی اسکیم کے دائرہ کار میں شامل کرنے پر غور کیا جارہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اردو اکیڈیمی کی تمام اسکیمات پر عمل آوری جاری ہے اور بعض اسکیمات مکمل کرلی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے اکیڈیمی کو جو بجٹ جاری کیا گیا ہے اس کے مطابق اسکیمات پر عمل آوری کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بیسٹ اردو ٹیچر، بیسٹ اردو اسٹوڈنٹ ایوارڈس کے علاوہ شعراء اور ادیبوں کی تصانیف پر امداد اور انعامات کی اسکیم مکمل کرلی گئی۔ چھوٹے اردو اخبارات کو سالانہ امداد کی اسکیم جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT