Monday , November 20 2017
Home / Top Stories / تلنگانہ کے مایناریٹی ریزیڈنشیل اسکولس کیلئے مرکزی حکومت سے فنڈس کی اجرائی پر زور

تلنگانہ کے مایناریٹی ریزیڈنشیل اسکولس کیلئے مرکزی حکومت سے فنڈس کی اجرائی پر زور

حیدرآباد ۔ 19 ۔ اگست : ( سیاست نیوز) : ڈپٹی چیف منسٹر تلنگانہ جناب محمد محمود علی نے آج دہلی میں سابق مرکزی وزیر مسز نجمہ ہبت اللہ سے ملاقات کرتے ہوئے انہیں گورنر منی پور نامزد ہونے پر مبارکباد دی ۔ وعدے کے مطابق میناریٹی ریزیڈنشیل اسکولس کے لیے مرکز سے 50 فیصد فنڈز جاری کرانے پر زور دیا ۔ انہوں نے مسز نجمہ ہبت اللہ کو بتایاکہ وہ جب مرکزی وزیر اقلیتی امور تھیں تب چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کی جانب سے مسلمانوں کی تعلیمی پسماندگی دور کرنے کے لیے کیے جانے والے اقدامات کی ستائش کی ۔ بالخصوص میناریٹی ریزیڈنشیل اسکولس کی کامیابی کے لیے اپنے ڈپارٹمنٹ سے 50 فیصد فنڈز تلنگانہ کو مختص کرنے کا وعدہ کیا تھا ۔ چونکہ اب تلنگانہ حکومت نے اقلیتی اقامتی اسکولس کا آغاز کردیا ہے اور ہزاروں لڑکے و لڑکیاں ان تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم ہیں ۔ لہذا وعدے کے مطابق موجودہ مرکزی وزیر اقلیتی امور مسٹر مختار عباس نقوی سے بات چیت کرتے ہوئے فنڈز کی اجرائی کو یقینی بنانے کی خواہش کی اور کہا کہ حکومت اقلیتوں کی تعلیمی پسماندگی کو دور کرنے کے لیے اپنی جانب سے ہر ممکن کوشش کررہی ہے ۔ اسکیم میں تلنگانہ حکومت کے ساتھ تعاون کریں تو اسکیم کو کامیاب بنانے مددگار ثابت ہوگی ۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے مسز نجمہ ہبت اللہ کو بتایا کہ سعودی عرب میں پیدا شدہ مالی بحران کے باعث تلنگانہ کے کئی افراد بیروزگار ہوگئے ہیں مذاکرات کے بعد تلنگانہ کے افراد کو 6 تا 8 ماہ کی تنخواہیں ادا کرنے کا وعدہ کیا گیا تھا مگر افسوس کا اظہار کیا کہ سعودی حکام تلنگانہ کے مزدوروں کو خالی ہاتھ روانہ کررہی ہے ۔ لہذا وہ متعلقہ وزارت سے ربط کریں اور تلنگانہ کے مزدوروں کے ساتھ ہونے والی نا انصافیوں کا ازالہ کرانے کی کوشش کریں ۔ گورنر منی پور مسز نجمہ ہبت اللہ نے دونوں مطالبات پر مثبت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اقلیتی اقامتی اسکولس کے لیے فنڈز کی اجرائی اور تلنگانہ مزدوروں کے ساتھ ہونے والی نا انصافیوں کے تعلق سے دونوں وزارتوں کو توجہ دلاتے ہوئے انصاف دلانے کی ہر ممکن کوشش کریں گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT