Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / تلنگانہ کے مشن کاکتیہ اور مشن بھگیرتا بے مثال اسکیمات

تلنگانہ کے مشن کاکتیہ اور مشن بھگیرتا بے مثال اسکیمات

چیف منسٹر کے فلاحی و بہبودی پروگراموں کی ملک بھر میں شہرت: کڈیم سری ہری
حیدرآباد 23 اپریل (سیاست نیوز) تلنگانہ حکومت ملک بھر میں عوامی فلاح و بہبودی پروگراموں کی عمل آوری میں سرفہرست ہے اور اس طرح کسی بھی معاملہ میں چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ کا کوئی بھی مقابلہ نہیں کرسکے گا۔ ڈپٹی چیف منسٹر برائے اُمور تعلیم کے سری ہری نے یہ بات کہی اور بتایا کہ حکومت کی جانب سے روبہ عمل لائی جانے والی اسکیمات مشن کاکتیہ اور مشن بھگیرتا بے مثال اسکیمات ہیں۔ اور بعض دیگر ریاستیں بھی ان اسکیمات کو روبہ عمل لانے کے لئے کوشاں ہیں۔ انھوں نے سابقہ حکومتوں بالخصوص کانگریس قائدین کو اپنی سخت تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ سابق کانگریس حکومتوں میں کسان دھرنا منظم کرتے ہوئے زیادہ تر وقت سڑکوں پر گزارنے پر مجبور تھے لیکن آج صورتحال بالکل برعکس ہوچکی ہے۔ آج کسان اپنا مکمل وقت کاشت کاری اور فصل اُگانے کے لئے صرف کررہے ہیں۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے مزید کہاکہ حکومت کی جانب سے غریب ہندو مسلم لڑکیوں کی شادی سے متعلق روبہ عمل لائی جانے والی کلیان لکشمی اور شادی مبارک اسکیمات اپوزیشن جماعتوں کو دکھائی نہیں دے رہی ہیں جبکہ ان دونوں اسکیمات کے ذریعہ ہزاروں ہندو اور مسلم غریب لڑکیوں کی شادیاں انجام پارہی ہیں۔ مسٹر سری ہری نے کہاکہ حکومت غریب حاملہ خواتین کو بہتر طبی امداد بہم پہنچانے کے ساتھ تین مرحلوں میں حاملہ عورت اور تولد ہونے والے بچے کو تغذیہ بخش غذا کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے 12 ہزار روپئے فراہم کرنے کے اقدامات کررہی ہے۔ علاوہ ازیں پیدا ہونے والے بچوں کے لئے ’’کے سی آر کٹ‘‘ بھی فراہم کی جارہی ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر نے ریاست کے تمام اپوزیشن جماعتوں کو ہدف ملامت بناتے ہوئے کہاکہ حکومت تلنگانہ کی روبہ عمل لائی جانے والی اسکیمات سے اپوزیشن جماعتیں بوکھلاہٹ کا شکار ہیں بلکہ کانگریس، تلگودیشم اور وائی ایس آر کانگریس پارٹی کو اس بات کا خدشہ ہوچکا ہے کہ ان اسکیمات کی مؤثر عمل آوری کی صورت میں ریاست تلنگانہ میں ان کا وجود ختم ہوجائے گا۔ جبکہ کمیونسٹ جماعتوں کے گڑھ تصور کئے جانے والے علاقے بھی اب ٹی آر ایس کے گڑھ میں تبدیل ہوتے جارہے ہیں کیوں کہ کمیونسٹ علاقوں کے عوام بھی تلنگانہ حکومت کی اسکیمات سے نہ صرف متاثر ہورہے ہیں بلکہ بھرپور استفادہ کررہے ہیں جس کے نتیجہ میں ہی عوام ٹی آر ایس کی تائید و حمایت کررہے ہیں۔ اس صورتحال کے باوجود کمیونسٹ جماعتیں حکومت کو تنقید کا نشانہ بنانے کے اپنی روایتی طریقہ کار سے باز نہیں آرہی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT