تلنگانہ یونین آف ورکنگ جرنلسٹس کا کل یوم توجہ دہانی احتجاجی مظاہرہ

حیدرآباد ڈسٹرکٹ کلکٹریٹس پر احتجاجی مظاہرے، دیرینہ مسائل کو حل کرنے کا مطالبہ

حیدرآباد ڈسٹرکٹ کلکٹریٹس پر احتجاجی مظاہرے، دیرینہ مسائل کو حل کرنے کا مطالبہ
حیدرآباد ۔ 9 اگست (تبارک نیوز) تلنگانہ یونین آف ورکنگ جرنلسٹس نے کارکن صحافیوں (پرنٹ و الیکٹرانک میڈیا) سے تعلق رکھنے والے تمام کارکنوں کیلئے ہیلت انشورنس اسکیم میڈی کلیم کی تجدید اور سرکاری ملازمین کو فراہم کردہ طبی سہولتوں کے مماثل خدمات کا مطالبہ کرتے ہوئے ریاست گیر پیمانہ پر پیر 11 اگست کو ’’یوم توجہ دہانی‘‘ منایا جائے گا۔ یونین کے ایک ہنگامی اجلاس آج منعقد ہوا جس میں تمام اضلاع کے صحافیوں سے کہا کہ وہ 11 اگست کو ضلع کلکٹرس کے دفاتر پر جمع ہوں اور ہیلت انشورنس اسکیم کے نفاذ کا مطالبہ کریں جبکہ حیدرآباد میں 10.30 بجے دن دفتر کمشنر اطلاعات و تعلقات عامہ پر دونوں شہروں حیدرآباد وسکندرآباد سے تعلق رکھنے والے صحافت سے وابستہ تمام افراد اکھٹا ہوں گے۔ بعدازاں ایک یادداشت پیش کی جائے گی۔ جنرل سکریٹری انڈین جرنلسٹ یونین مسٹر ڈی امر نے کہا کہ 2004ء سے جاری ہیلت انشورنس اسکیم میڈی کلیم نافذ العمل رہا جس کے تحت ایک لاکھ روپئے سالانہ ہیلت انشورنس کے ذریعہ علاج کروایا جاسکتا تھا لیکن اسے 2013ء کے درمیان تجدید کی جانی چاہئے تھی۔ جناب راحت علی جنرل سکریٹری تلنگانہ یونین نے کہا کہ اگست اور نومبر 2013ء کے درمیان ہیلت انشورنس پالیسی کی تجدید کیلئے صحافیوں نے پالیسی کی تجدید کیلئے اپنے حصہ کی رقم جو ایک کروڑ سے زائد پر مشتمل ہے، ریاستی حکومت نے اپنے حصہ کی رقم جاری نہیں کی۔ سابق جنرل سکریٹری مسٹر وائی نریندر ریڈی نے کہا کہ متحدہ ریاست میں جب حکومت سے معاملہ کو رجوع کیا گیا تھا تب حکومت نے سرکاری ملازمین کے خطوط پر علاج کی سہولتیں فراہم کرنے کیلئے سالانہ 82 لاکھ روپئے کی طبی اخراجات کا اعلان کیا تھا۔ جناب خلیل قادری سابق صدر حیدرآباد یونین آف جرنلسٹ نے کہا کہ پچھلے ایک سال کے دوران بے شمار صحافی انتقال کر گئے کئی ایک حادثات کا شکار ہوئے اور کئی مختلف امراض میں مبتلاء ہوگئے لیکن ہیلت انشورنس نہ ہونے کی وجہ سے انہیں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ رکن عاملہ تلنگانہ یونین آف جرنلسٹس جناب فیض محمد اصغر نے کہا کہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل جدید اور نئی حکومت کے ذمہ داران چیف منسٹر مسٹر کے چندرشیکھر راؤ کے علاوہ ڈپٹی چیف منسٹر و دیگر اعلیٰ عہدیداران کو توجہ دلائی گئی لیکن اس کا کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ ایسی صورتحال کے پیش نظر پیر 11 اگست کو یوم توجہ دہانی منانے کا فیصلہ کیا ہے۔ یونین کے قائدین مسرس نریندر ریڈی، کے سدرشن، ایم اے ماجد، وائی یادگیری، ریاض احمد، طاہر رومانی، نعیم وجاہت ، مبشرالدین خرم، عادل احمد خان، ایس ایس کے اقبال، کوٹی ریڈی، شراون اور دیگر عہدیداران یونین نے صحافیوں سے اس احتجاج میں زیادہ سے زیادہ حصہ لینے کی اپیل کی ہے۔

TOPPOPULARRECENT