Wednesday , June 20 2018
Home / شہر کی خبریں / تلگودیشم اور ٹی آر ایس کی دہلی میں سرگرمیاں ‘مختلف قائدین سے ملاقاتیں

تلگودیشم اور ٹی آر ایس کی دہلی میں سرگرمیاں ‘مختلف قائدین سے ملاقاتیں

نئی دہلی ۔3فبروری (پی ٹی آئی / این ایس ایس ) آندھراپردیش کی علاقائی جماعتوں نے علحدہ ریاست تلنگانہ کے مسئلہ پر آج مختلف سیاسی جماعتوں سے سلسلہ وار ملاقاتیں کی ۔ صدر تلگودیشم پارٹی مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے جہاں بی جے پی اور جنتادل ( یو) قائدین سے ملاقات کی وہیں ٹی آر ایس سربراہ کے چندر شیکھر راؤ نے سی پی آئی قائدین سے ملاقات کی ۔ دو

نئی دہلی ۔3فبروری (پی ٹی آئی / این ایس ایس ) آندھراپردیش کی علاقائی جماعتوں نے علحدہ ریاست تلنگانہ کے مسئلہ پر آج مختلف سیاسی جماعتوں سے سلسلہ وار ملاقاتیں کی ۔ صدر تلگودیشم پارٹی مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے جہاں بی جے پی اور جنتادل ( یو) قائدین سے ملاقات کی وہیں ٹی آر ایس سربراہ کے چندر شیکھر راؤ نے سی پی آئی قائدین سے ملاقات کی ۔ دونوں پارٹیوں نے آر ایل ڈی سربراہ اجیت سنگھ سے تین گھنٹہ کے وقفہ سے علحدہ ملاقاتیں کیں۔ سی پی آئی اور آر ایل ڈی نے جہاں اس بل کی تائید کا یقین دلایا وہیں جنتادل (یو) نے کہا کہ وہ کسی فیصلہ سے قبل پارٹی اجلاس میں غوروخوض کرے گی ۔ تلگودیشم پارٹی صدر مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی زیرصدارت پارٹی وفد نے آج صدر بی جے پی راجناتھ سنگھ سے ملاقات کی ۔ چندرا بابو نائیڈو نے ریاست کو تقسیم کرنے کانگریس کے فیصلہ کی وجہ سے پیدا شدہ صورتحال سے صدر بی جے پی کو واقف کرایا ۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ وہ دیگر علاقوں کے عوام کے ساتھ مکمل انصاف کو یقینی بنائے بغیر بل کو منظور ہونے نہ دیں ۔

اس ضمن میں وہ مرکز پر دباؤ ڈالیں ۔ مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے راج ناتھ سنگھ سے ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے مرکز پر ریاست کی تقسیم کے سلسلہ میں دستوری قواعد کی مبینہ طور پر خلاف ورزی کا الزام عائد کیا ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس ‘ ٹی آر ایس اور وائی ایس آر کانگریس تقسیم کے مسئلہ پر ڈرامہ بازی کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم ابتداء ہی سے یہ موقف رکھتے ہیں کہ اس مسئلہ پر اتفاق رائے کی ضرورت ہے ۔اس ضمن میں یکطرفہ فیصلہ کارآمد ثابت نہیں ہوگا ۔ چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ ریاست کی تقسیم کے تعلق سے چیف منسٹر اور ڈپٹی چیف منسٹر نے دو گروپس قائم کرلئے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ قومی قائدین سے ملاقات کے دوران اس سازش کو بے نقاب کیا جائے گا ۔ہم دونوں علاقوں کے عوام کے ساتھ انصاف تک اپنی جدوجہد جاری رکھیں گے ۔ انہوں نے یہ جاننا چاہا کہ کیا کرن کمارریڈی کو اس مسئلہ پر سڑکوں پر آنا چاہیئے یا وہ سونیا گاندھی کے ساتھ اس مسئلہ کو حل کرنے کی کوشش کریں ؟ ۔

انہوں نے کہا کہ کرن کمار ریڈی اور جگن موہن ریڈی کے پاس یہ حوصلہ نہیں ہے کہ وہ سونیا گاندھی کی رہائش گاہ کے روبرو دھرنا دیں۔ بعد ازاں چندرا بابو نائیڈو نے صدر جمہوریہ پرنب مکرجی سے ملاقات کی اور آندھراپردیش تنظیم جدید بل 2013ء میں خلاف ورزیوں کو اُجاگر کیا ۔ دوسری طرف ٹی آر ایس نے اس یقین کا اظہار کیا کہ یہ بل پارلیمنٹ میں منظور ہوجائے گا ۔ ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ انہیں بل کی منظوری کا صدفیصد یقین ہے ۔ وہ نہیں سمجھتے کہ بی جے پی اپنے موقف سے پلٹ جائے گی ۔ انہوں نے سینئر بی جے پی لیڈر سشما سواراج کے تلنگانہ بل کی تائید میں دیئے گئے بیان کا حوالہ دیا ۔

TOPPOPULARRECENT