Wednesday , June 20 2018
Home / Top Stories / تلگودیشم دونوں ریاستوں میں نئی طاقت ہوگی

تلگودیشم دونوں ریاستوں میں نئی طاقت ہوگی

حیدرآباد۔/5مارچ، (سیاست نیوز) تلگودیشم پارٹی ریاست تلنگانہ اور سیما آندھرا میں ایک نئی طاقت بن کر اُبھرے گی اور انتخابات میں اس کا مظاہرہ غیر معمولی رہے گا۔ صدر تلگودیشم پارٹی مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے نیلور میں منعقدہ ’’ تلگوگرجنا ‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے انتخابات میں پارٹی کی بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی کا دعویٰ کیا۔ انہوں نے

حیدرآباد۔/5مارچ، (سیاست نیوز) تلگودیشم پارٹی ریاست تلنگانہ اور سیما آندھرا میں ایک نئی طاقت بن کر اُبھرے گی اور انتخابات میں اس کا مظاہرہ غیر معمولی رہے گا۔ صدر تلگودیشم پارٹی مسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے نیلور میں منعقدہ ’’ تلگوگرجنا ‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے انتخابات میں پارٹی کی بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی کا دعویٰ کیا۔ انہوں نے جذباتی تقریر کرتے ہوئے کانگریس کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ محض اپنے فائدہ کیلئے اس نے تلگو عوام کو دو ریاستوں میں تقسیم کردیا۔ انہوں نے کہا کہ تلگو عوام کے اگر کوئی دشمن اور مخالفین ہیں تو وہ دہلی میں رہنے والے کانگریس قائدین ہیں جو ہمیشہ تلگو عوام کی توہین کرتے رہے ہیں۔ مرکزی وزیر جئے رام رمیش پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے جاننا چاہا کہ تلگو عوام کی زندگیوں سے کھلواڑ کرنے والے آخر وہ کون ہوتے ہیں؟ مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے کہا کہ صدر کانگریس سونیا گاندھی ہی سب سے بڑی بدعنوان لیڈر ہیں اور انہوں نے ہی جگن موہن ریڈی جیسے چھوٹے بدعنوان لیڈرس کو تیار کیا ہے۔

انہوں نے کانگریس دور حکومت میں منظر عام پر آئے مختلف اسکامس اور اسکینڈلس کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس کے پس پردہ کانگریس قائدین ہی کارفرما رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے جگن کی مدد سے ریاست کی تقسیم کے ذریعہ ایک نئی چال چلی ہے۔آندھرا پردیش کی تقسیم کا مقصد صرف اور صرف اقتدار کا حصول ہے اور کانگریس نے محض اقتدار کی خاطر یہ سازش کی ہے۔صدر تلگودیشم پارٹی نے کہا کہ انہیں اپنے افراد خاندان سے کہیں زیادہ پارٹی کے قائدین و کارکن ہی بہت عزیز ہیں کیونکہ تلگودیشم پارٹی قائدین اور کارکنوں میں پارٹی استحکام کیلئے کام کرنے کا حقیقی جذبہ پایا جاتا ہے جس کے پیش نظر تلگودیشم کی دولت کو لوٹ لینے والے صدر وائی ایس ایس آر کانگریس پارٹی مسٹر وائی ایس جگن موہن ریڈی کو انتخابات میں دور رکھنے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ کبھی بھی سیما آندھرا کی ترقی پر کانگریس پارٹی نے کوئی توجہ نہیں دی لیکن تلگودیشم پارٹی کے ذریعہ سیما آندھرا علاقہ کی ترقی ممکن ہوگی۔ انہوں نے سیما آندھرا عوام میں ریاست کی تقسیم کے باعث کافی حد تک خوفزدہ اور مایوس دکھائی دے رہے ہیں۔

مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے سیما آندھرا عوام کی ہمت باندھتے ہوئے کہا کہ سیما آندھرا عوام کو ہرگز مایوس ہونے کی ضرورت نہیں ہے کیونکہ تلگودیشم پارٹی سیما آندھرا عوام کے ساتھ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریاست کی تقسیم کے ذریعہ تلگو عوام کو ایک دوسرے کے خلاف لڑانے کے لئے اقدامات کرنے والی کانگریس پارٹی کا عوام بالکلیہ طور پر صفایا کردیں گے کیونکہ کانگریس پارٹی کی جانب سے تلنگانہ عوام کودیئے گئے دھوکہ پر غور کریں تو کافی تکلیف ہوتی ہے۔ اس موقع پر بانی تلگودیشم پارٹی مسٹر این ٹی راما راؤ کو اپنا بھرپور خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ این ٹی راما راؤ نے تلگو عوام کی عزت نفس کا تحفظ کیا تھا۔ مسٹر چندرا بابو نائیڈو نے شہر حیدرآباد کی ترقی کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کے دور اقتدار میں ہی شہر حیدرآباد میں ہمہ جہتی ترقی ہوئی ہے۔تلگودیشم پارٹی کے نیلور میں منعقدہ ’ پرجا گرجنا‘ میں عوام کی غیر معمولی تعداد شریک تھی۔ اس موقع پر دیگر پارٹیوں کے کئی قائدین نے تلگودیشم پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔

TOPPOPULARRECENT